ہفتہ 14 ذوالحجہ 1442ﻫ - 24 جولائی 2021

جاپان نے افغانی مہاجرین کیلئے 10 لاکھ امریکی ڈالر کی امداد کا اعلان کردیا

اسلام آباد – جاپان نے جمعرات کو پاکستان میں موجود افغان مہاجرین کی امداد کے لئے 10 لاکھ امریکی ڈالر کی امداد کی۔ یہ وزیر برائے انسداد منشیات اور سفروں، شہریار آفریدی کی طرف سے افغان مہاجرین کی مدد کیلئے کی جانے والی کوششوں کے جواب میں پہلا بین الاقوامی ردعمل ہے۔
جاپان کے سفیر کونینوری مٹسودا نے اسلام آباد میں شہریار آفریدی سے ملاقات کے دوران جاپانی حکومت اور عوام کے جانب سے دی جانے والی امداد کی پیشکش کی۔
انہوں نے کہا کہ یہ رقم یو این ایچ سی آر کو ادا کردی گئی ہے اور یہ افغان مہاجرین کی مدد کے لئے استعمال ہوگی۔
انہوں نے کہا کہ جاپانی حکومت کورونا وائرس (COVID-19) کی وباء سے نمٹنے کے لئے پاکستان کی جانب سے اٹھائے جانے والے اقدامات کی تائید کرتی ہے۔
انہوں نے کہا کہ جاپانی حکومت کوویڈ 19 سے لڑنے کے لئے پاکستانی ہوائی اڈوں پر بھی اپنا کردار ادا کرنا چاہتی ہے۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان 40 سال سے افغان مہاجرین کی فراخ دلی سے میزبانی کر رہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ماضی میں انہوں نے پشاور کے افغان مہاجرین کیمپ کا دورہ کیا اور دیکھا کہ پاکستان کس فراخ دلی سے افغانیوں خاص طور پر افغان بچوں کا خیال رکھے ہوئے ہے۔ نہ صرف یہ بلکہ پاکستان نے افغان بچوں کو پاکستانی بچوں کے برابر کی حیثیت دے رکھی ہے۔
انہوں نے یہ بھی کہا کہ جاپانی حکومت اقتصادی ترقی میں خیبرپختونخوا حکومت کی حمایت کرتی رہی ہے اور وہ وفاقی حکومت کی بھی مدد کرنا چاہتی ہے۔
انہوں نے مزید کہا ، "افغانستان میں افغان امن معاہدے میں پاکستان کا کردار کلیدی ہے اور جاپان خیبر پختونخوا اور افغانستان میں ترقیاتی عمل کا حصہ بننا چاہتا ہے۔”
انہوں نے کہا کہ کورونا کی آزمائش سے نکلنے کے بعد جاپان کھیلوں کے میدان میں بھی پاکستان کے ساتھ تعلق استوار کرے گا۔
شہریار آفریدی نے افغان مہاجرین کی مدد کرنے پر جاپان کی حکومت اور عوام سے اظہار تشکر کیا اور کہا کہ اس شراکت سے لاک ڈاؤن سے متاثر ہونے والے افغانوں کی مدد کرنے میں خاص مدد ملے گی۔
انہوں نے کہا: "ہم شکر گزار ہیں اور امید کرتے ہیں کہ جاپان کی جانب سے مشکل کی اس گھڑی میں پھنسے ہوئے افغانوں کیلئے کی گئی مدد سے مغربی ممالک کو ایک مضبوط پیغام پہنچے گا۔”
انہوں نے کہا کہ جاپان نے ہمیشہ تکلیف میں مبتلا انسانیت کی مدد کرنے میں غیر معمولی کردار ادا کیا ہے۔ جاپان نے ہمیشہ مُشکلات میں تمام ممالک کی قیادت کی ہے اور محروم لوگوں کو یاد رکھا ہے۔
پاکستان میں 2.8 ملین افغان مہاجرین موجود ہیں جن میں 32 فیصد کیمپوں میں مقیم ہیں۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان نے افغان مہاجرین کو پاکستانی شہریوں کے مساوی مواقع فراہم کیے ہیں اور ہمارے معاشرے میں ان کا مرکزی کردار رہا ہے۔
وزیرمملکت نے مزید کہا ، "پاکستان 50000 افغان طلباء کو وظیفے فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ ماہانہ 60000 افغانوں کو مفت ویزا دیتا ہے۔”
انہوں نے کہا کہ انکی درخواست پر وزیر اعظم نے اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل کو افغان مہاجرین کو خصوصی امداد فراہم کرنے کیلئے خط بھی لکھا۔
"کورونا کے دوران بھی ہم مہاجرین کی مدد کر رہے ہیں۔ خوشحال دنیا اِن کی مدد کیلئے کیوں نہیں آرہی ہے۔ 85 فیصد افغانی مہاجرین دیہاڑی دار طبقے پر مشتمل ہے ہمیں ان کو طبی سامان مہیا کرنے کی بھی ضرورت ہے تاکہ افغانیوں کو کورونا سے لڑنے میں مدد ملے۔” شهریا آفریدی

یہ بھی دیکھیں

وزارتِ مذہبی امور نے کرونا وبا ء کےسلوگن کے حوالے سے نوٹیفکیشن جاری کردیا۔  حکام مذہبی امور

وزارتِ مذہبی امور نے کرونا وبا ء کےسلوگن کے حوالے سے نوٹیفکیشن جاری کردیا۔  حکام …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے