منگل 29 رمضان 1442ﻫ - 11 مئی 2021

ذلفی بخاری کی پاکستانی امریکن میڈیا اور کمیونٹی قائدین کے ساتھ ویبینار : پاکستانیوں کی شہادت پر تاخیر سے تعزیت معذرت

نیویارک (خصوصی رپورٹ) وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے اوورسیز پاکستانیز سید زلفی بخاری نے کہا ہے کہ امریکہ میں کرونا وائرس کی وجہ سے انتقال کرنے والے پاکستانیوں کے اہل خانہ کے غم میں وزیر اعظم عمران خان سمیت حکومت پاکستان اور پوری پاکستانی قوم برابر کی شریک ہے اور اس وبا ئی مرض کا شکار ہونیوالے پاکستانی امریکن کی جلد صحت یابی کے لئے بھی ہم دعا گو ہیں ۔ امریکہ میں موجود پاکستانی ایمبسی اور پورے سفارتی عملے کو کمیونٹی کی ہر ممکن مدد کی جامع ہدایات ہیں ۔ سوگوار پاکستانی خاندانوں سے اظہارتعزیت کے سلسلے میں تاخیر پر میں اوورسیز کمیونٹی سے معافی مانگتا ہوں اور انہیں یقین دلاتا ہوں کہ ان کی ہر ممکن مدد کے لئے اپنا ہر ممکن کردار ادا کرونگا۔ ان ملے جلے خیالات کا اظہار انہوں نے پاکستانی امریکن الیکٹرونک اور پرنٹ میڈیا کے ساتھ ساتھ پاکستانی امریکن کمیونٹی کے قائدین سے ویڈیو کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا ۔اس ویڈیو کانفرنس میں واشنگٹن سے پاکستانی سفیر ڈاکٹراسد مجید خان اور نیویارک سے پاکستانی قونصل جنرل عائشہ علی بھی موجود تھیں ۔
ویڈیو کانفرنس کے اہتمام میں تحریک انصاف امریکہ کے عمران اگراپرویز ریاض، عمران اگرہ ، مرزا خاور بیگ ، ضمیر احمد چوہدری سمیت ان کے ساتھیوں نے کردارادا کیا۔ ویڈیو کانفرنس میں زلفی بخاری کو میڈیا اور کمیونٹی قائدین کی جانب سے امریکہ میں پھنسے ہوئے پاکستانیوں جن کی تعداد 750بتائی جا رہی ہے ، کی وطن واپسی اور میتوں کی پاکستان روانگی کے حوالے سے بتایا گیا اور کہا گیا کہ یہ یہاں پر ایک بڑا مسلہ بنا ہوا ہے ، جس کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہم اوورسیز ممالک سے خصوصی پروازوں کے ذریعے پاکستانیوں کو وطن واپس لا رہے ہیں جن کی تعداد ہزاروں میں ہے ۔
زلفی بخاری نے کہا کہ جہاں تک امریکہ میں پھسنے ہوئے پاکستانیوں کا تعلق ہے تو پی آئی اے کی پروازوں کو امریکہ آمدو رفت کی اجازت نہیں ہے تاہم ہم بالواسطہ روٹ سے ان کی وطن واپسی کا راستہ نکال رہے ہیں ۔ حکومت پاکستان کی جانب سے قطر ائیرویز کی ہفتے میں مخصوص پروازوں کو پاکستان آمد کی اجازت دی جا رہی ہے ۔ امریکہ میں پھنسے ہوئے پاکستانی ،امریکہ سے قطر ائیرویز کے ذریعے دوہا(قطر) پہنچ کر اور وہاں سے پاکستان کی فلائٹ لے کر وطن واپس آسکتے ہیں ۔ایسے پاکستانی کی کہ جو اپنے عزیز و اقارب کی میتوں کو پاکستان واپس لانا چاہتے ہیں، کی وطن آمد کے سلسلے میں بھی ہم ممکن مدد کرنے کے لئے تیار ہیں ۔
ویڈیو کانفرنس سے خطاب کے دوران سفیر اسد مجید خان نے کہا کہ پاکستان ایمبسی کو ہم نے لاک ڈاو¿ن کے دوان ایک دن بھی بند نہیں کیا، قونصل خانے کے حکام مسلسل گھروں سے کام کررہے ہیں ۔ امریکہ میں جوپاکستانی وطن واپسی کے سلسلے میں پھنسے ہوئے ہیں ، ان کو ہر ممکن مدد فراہم کررہے ہیں اور کرتے رہیں گے جب تک کہ وہ بحفاظت وطن واپس نہیں چلے جاتے ۔ سوگوار خاندانوں سے رابطے کرکے ان سے اظہارتعزیت کررہے ہیں اور ہم ان کے غم میں برابر کے شریک ہیں ۔
قونصل جنرل نیویارک عائشہ علی نے کہا کہ نیویارک قونصلیٹ کے دائرہ کار میں موجود ریاستوں میں موجود ایسے پاکستانی کہ جو یہاں رکے ہوئے ہیں ، کو رہائش ، کھانا ، ادویات سمیت ہر ممکن سہولیات فراہم کررہے ہیں ، وائس قونصل جنرل نعیم چیمہ کو فوکل پرسن مقرر کیا ہوا ہے جو کہ 24گھنٹے دستیاب ہیں ۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ایسے مستحق پاکستانی کہ جن کے خاندان ان کے فیونرل کے اخراجات برادشت نہیں کر سکتا ، کے اخراجات قونصل خانہ برداشت کرے گا ۔ ہم ایسے پاکستانی پاسپورٹ ، شناختی کارڈز اور ویزہ کہ جن کی معیاد ختم ہو رہی ہے یا ختم ہو گئی ہے ، کی مخصوص عرصے کے لئے فری تجدید کررہے ہیں ۔
سفیر اسد مجید خان نے کہا کہ نیویارک قونصلیٹ کی طرح باقی تینوں قونصل خانوں اور ایمبسی میں بھی مذکورہ خدمات کی فراہمی کو سو فیصد یقینی بنایا جا رہا ہے اور اس سارے عمل کی خود نگرانی کررہا ہوں ۔
سید زلفی بخاری نے کہا کہ پاکستان میں کرونا ، تفتان سے آنیوالے زائرین کی بذریعہ سرحد آنیوالے زائرین کی وجہ سے نہیں پھیلا کیونکہ ان میں سے کسی ایک کی بھی موت نہیں ہوئی بلکہ کرونا بذریعہ ہوائی جہاز تفتان کے زائرین اور عمرے کی ادائیگی کرکے وطن واپس آنے والوں کی وجہ سے پھیلا ۔ انہوں نے کہا کہ الحمد للہ پاکستان میں کرونا وائرس کی وجہ سے اموات اور وائرس کے پھیلنے کی شرح بہت کم ہے ۔ یہ اللہ کا کرم ہے ۔ انہوں نے کہا کہ امریکی حکومت نے صرف عوام کو ریلیف دینے کی مد میں دو کھرب روپے خرچ کئے ہیں جبکہ پاکستان اپنے محدود وسائل سے ملک و قوم کو کرونا وائرس سے بچانے کی ہر ممکن کوشش کررہا ہے ۔ اس موقع پر پاکستانی عوام کو پاکستان اور اوورسیز میں موجود مخیر حضرات کی مدد کی ضرورت ہے ۔ میں اپیل کرونگا کہ وزیر اعظم کرونا فنڈز میں اپنی استطاعت کے مطابق اپنا حصہ ڈالیں ، اللہ تعالیٰ اس نیکی کا اجر عظیم عطاءفرمائیں گے ۔
ایک اور سوال کے جواب میں وزیر اعظم کے معاون خصوصی نے کہا کہ پاکستان میں لاک ڈاو¿ن جن شعبوں سے تعلق رکھنے والے افراد ، کاروبار اور اداروں کا کام کی اجازت دے رہے ہیں ، ان کو حکومت کی جانب سے مقرر کردہ گائیڈ لائینز پر سختی سے عمل کرنے کی ہدایت بھی دے رہے ہیں ۔
زلفی بخاری نے کہا کہ کرونا کے مسلہ پر حکومت پاکستان نے نہیں بلکہ افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ سندھ نے سیاست کی کوشش کی ہے ۔وزیر اعظم عمران خان کی واضح ہدایت ہے کہ اس مسلہ پر ہمیں اپنی قومی ذمہ داریاں پوری کرنی ہیں اور انشاءاللہ کریں گے ۔
ایک سوال کے جواب میں وزیر اعظم کے معاون خصوصی نے کہا کہ اوورسیز پاکستانیوں کے لئے بہت جلد ایک قانون لا رہے ہیں جس کے تحت ان کے اراضی و جائیدادوں پر قبضے وغیرہ سے متعلق کیسوں کے فیصلے تین ہفتے میں ہو جائیں گے ۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اوورسیز پاکستانی ، سٹیٹ بنک کے ذریعے جو زرمبادلہ پاکستان بھیجیں گے ، یا یہاں اپنی رقم ”پارک“ (بنکوں میں مختص ) کریں گے ، اس پر ٹیکس کی مد میں ہم جس حد تک رعایات دے سکتے ہیں ، دینگے تاہم متعلقہ ممالک کے ٹیکس قوانین کو لوگ خود پیش نظر رکھیں ۔ انہوں نے کہا کہ کرونا کی وجہ سے عالمی معیشت پر گہرے اثرات مرتب ہو رہے ہیں ، ایسی صورتحال میں زرمبادلہ پر اثرات مرتب ہونے کی صورت میں شرح کرنسی کے معاملات سامنے آتے ہیں ۔ ان حالات میں اوورسیز پاکستانیوں کے زرمبادلہ کی بہت اہمیت ہے ۔
ویڈیو کانفرنس میں زلفی بخاری نے امریکہ میں پاکستانی امریکن ہی نہیں بلکہ بلا امتیاز لوگوں کو خدما ت ، کھانا وغیرہ فراہم کرنے والے پاکستانی امریکن اور تنظیموں کے کردار کو خراج تحسین پیش کیا ۔انہوں نے ویڈیو کانفرنس کے دوران انتقال کرنے جانے والے پاکستانی امریکن کی ارواح کے ایصال ثواب کے لئے فاتحہ خوانی بھی کروائی ۔

یہ بھی دیکھیں

وزارتِ مذہبی امور نے کرونا وبا ء کےسلوگن کے حوالے سے نوٹیفکیشن جاری کردیا۔  حکام مذہبی امور

وزارتِ مذہبی امور نے کرونا وبا ء کےسلوگن کے حوالے سے نوٹیفکیشن جاری کردیا۔  حکام …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے