پیر 13 صفر 1443ﻫ - 20 ستمبر 2021

مسلسل لاک ڈاؤن سے تنگ امریکی عوام مظاہرے کرنے لگے

ڈینور/ کولوراڈو( پرو اردو)امریکہ جہاں ہیلتھ کئیر ورکرز ( ڈاکٹرز، نرسز اور سپورٹنگ میڈیکل سٹاف) ہیروز کے طور سے دیکھے جاتے ہیں اکثریتی امریکنز انہیں نجات دہندہ سمجھتے ہیں وہی کچھ طبقہ ہیلتھ ورکرز سے ناراض بھی نظر آتا ہے. کم سے کم ریاست کولوراڈو میں تو یہی کچھ دیکھنے میں آیا.تفصیلات کے مطابق ریاست کولوراڈو کے دارالحکومت ڈینور میں مظاہرین نے لاک ڈاؤن اور شیلٹر ان پلیس احکامات کے خلاف ایک بار پھر مظاہرہ کیا. اتوار کے روز ہونے والے اس مظاہرے کے دوران مظاہرین نے ایک ہسپتال کے سامنے موجود کچھ ہیلتھ ورکرز پر آوازیں کسیں، انکا راستہ روکا اور سوشل میڈیا پر کورونا کے حوالے سے انکی پوسٹنگ پر انہیں برا بھلا بھی کہا. مظاہرین نے N95 ماسک چڑھائے اور گلوز پہنے ہیلتھ ورکرز کو دیکھ کر تیز تیز ہارن بھی بجائے اور ان پر چیخے چلائے.مشتعل افراد نے سڑکیں بلاک کردیں جس کیوجہ سے لوگوں کو آمدورفت میں مشکل پیش آئی, ایک فوٹو جرنلسٹ نے نیویارک ٹائمز کو بتایا کہ مظاہرین کا بنیادی ہدف اور اشتعال کا نشانہ ہیلتھ ورکرز تھے. پولیس نے موقع واردات پر پہنچ کر ہیلتھ ورکرز کو بحفاظت وہاں سے جانے میں مدد کی.ایک خاتون نے چیختے ہوئے کہا کہ ہیلتھ ورکرز کو مسیحا بننے کا اتنا ہی شوق ہے تو چین چلے جائیں.مظاہرین کا کہنا تھا” کورونا ختم کیا جائے، معیشت نہیں” ایک شخص نے کہا کہ ھم صحت بھی چاہتے اور استحکام بھی. مظاہرہ میں سینکڑوں افراد نے شرکت کی.

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا حکم۔ 

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے