منگل 13 ربیع الاول 1443ﻫ - 19 اکتوبر 2021

عالمی وباء کرونا وائرس کے باعث ملکی معیشت پر پڑنے والے اثرات کا معاملہ۔

عالمی وباء کرونا وائرس کے باعث ملکی معیشت پر پڑنے والے اثرات کا معاملہ۔

کورونا وائرس سے معیشت پر پڑنے والے اثرات کے جائزہ کے لیے پارلیمانی کمیٹی براے کورونا وائرس کا چوتھا اجلاس27 اپریل کو سہ پہر 2 پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد ہو گا۔

اجلاس کی صدارت اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کریں گے۔

وزیر صنعت و پیداوار کمیٹی کو کرونا وائرس کے باعث لاک ڈاؤن کے صنعتی شعبے پر پڑنے والے اثرات اور معیشت کے تحفظ کے لئے اٹھاے جانے والے ضروری اقدامات پر کمیٹی کو آگاہ کریں گے۔

وزیر اعظم کے مشیر تجارت کمیٹی کو لاک ڈاؤن کے باعث ملکی درآمدات و برآمدات اور اندرون ملک تجارتی سرگرمیوں کے حوالے سے کمیٹی کو آگاہ کریں گے۔

پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس میں کاروباری طبقہ کے نمائندوں کو بھی خصوصی طور پر مدعو کیا گیا ہے۔

پارلیمانی کمیٹی فیڈریشن آف چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری، تاجروں کی تنظیم اور آنسٹیٹیوٹ آف چار ٹرد اکونٹُٹس کے نمائندوں سے ملکی معیشت پر منفی اثرات پر ان کی رائے لے گی۔

کاروباری نمائندے اس معاملے پر حکومت کا نقطہ نظر کو سنیں اور کورونا وائرس سے متاثر ہونے والی معیشت کی بحالی کے لئے حکومت کو مناسب سفارشات دیے سکیں۔

صدر فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری میاں انجم نثار اور اجمل بلوچ ، صدر آل پاکستان انجمن تاجران کو کمیٹی اجلاس میں مدعو کیا گیا۔

صدر فیڈریشن اور صدر آل پاکستان انجمن تاجران بالترتیب صنعتکاروں ، برآمد کنندگان اور درآمد کنندگان اور تاجروں کے خدشات اور مطالبات کے بارے میں کمیٹی آگاہ کریں گے۔

پارلیمانی کمیٹی نے انسٹیٹیوٹ آف چارٹرڈ اکاؤنٹنٹس آف پاکستان کی اقتصادی مشاورتی کمیٹی کے چیئرمین، اشفاق یوسف تولا سمیت دیگر ممبران کو بھی مدعو کیا ہے۔

کمیٹی اجلاس میں ممبران قومی اسمبلی علی پرویز ملک ، راجہ خرم شہزاد اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ سلیم مانڈوی والا بھی شرکت کریں گے۔

جو اجلاس کو کورونا وائرس کے سبب لاک ڈاؤن اور اس کے معیشت پر پڑنے والے اثرات اور اس کے تحفظ کے لیے فوری اقدامات پر کمیٹی کو اپنی سفارشات پیش کریں گے۔

25 رکنی پارلیمانی کمیٹی اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی صدارت میں قومی اسمبلی اور سینیٹ کی مساوی نمائندگی کے ساتھ تشکیل دی گئی تھی۔

کمیٹی ملک میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے اوراس سلسلے میں ھونےوالے امدادی کارروائیوں اور معیشت پر پڑنے والے اثرات اور اس کی بحالی کے لیے کیے گئے اقدامات کے بارے میں پارلیمانی نگرانی کرنا تھا۔

پارلیمانی کمیٹی نے اپنے سابقہ اجلاس میں سینیٹر شبلی فراز کی سربراہی میں ایک ذیلی کمیٹی بھی تشکیل دی ہے۔

کمیٹی اراکین قومی اسمبلی راجہ پرویز اشرف ، خواجہ محمد آصف ، محترمہ شاہدہ اختر علی اور سینیٹر محمد علی سیف پر مشتمل ہے۔

ذیلی کمیٹی پارلیمانی کمیٹی کی سفارشات کی جانچ اور ان کے نفاذ کی نگرانی کے لیے قائم کی گی ہے۔

ذیلی کمیٹی وقتا فوقتا اپنی رپورٹ پارلیمانی کمیٹی کو پیش کرے گی۔

یہ بھی دیکھیں

وزارتِ مذہبی امور نے کرونا وبا ء کےسلوگن کے حوالے سے نوٹیفکیشن جاری کردیا۔  حکام مذہبی امور

وزارتِ مذہبی امور نے کرونا وبا ء کےسلوگن کے حوالے سے نوٹیفکیشن جاری کردیا۔  حکام …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے