اتوار 6 رمضان 1442ﻫ - 18 اپریل 2021

برازیل کورونا کا نیا مرکز ثابت ہوسکتا ہے، حکومت حقائق چھپانے میں مصروف

ساؤ پالو/ برازیل( پرو اردو)یوں تو امریکہ کورونا وائرس کا اس وقت سب سے بڑا مرکز بنا ہوا جہاں متاثرین کی تعداد ایک ملین سے تجاوز کرگئی ہے دنیا بھر میں متاثرین کورونا کی تعداد تین لاکھ سے بڑھ چکی ہے امریکہ میں 56 ہزار سے زائد افراد اس وبا کے ہاتھوں جہاں فانی سے کوچ کرچکے ہیں اور ابھی اس وبا کی تباہ کاریاں جاری ہیں.ماہرین کا کہنا ہے کہ ایک اور ملک کورونا کو مرکز بن سکتا ہے جہاں سرکاری سطح پر متاثرین اور ہلاکتوں کی تعداد چھپائی جارہی ہے. ایک رپورٹ کے مطابق آبادی اور رقبے کے اعتبار سے لاطینی امریکہ کے سب سے بڑے ملک برازیل میں متاثرین اور ہلاکتوں کی تعداد کہیں زیادہ ہے جبکہ حکام جو تعداد بتارہے ہیں وہ بہت کم ہے. سرکاری اعداد و شمار کے مطابق 21 کروڑ سے زائد آبادی والے ملک برازیل میں کورونا کے متاثرین کے تعداد 68 ہزار کے لگ بھگ جبکہ مرنے والوں کی تعداد 4500 سے 4700 کے درمیان ہے. تاہم طبی ماہرین اور اداروں کا کہنا ہے کہ یہ تعداد حقیقت میں بہت کم ہے بلکہ بعض سائنسدانوں کا کہنا ہے برازیل میں متاثرہ افراد کی تعداد ایک ملین سے زیادہ ہے اور اس اعتبار سے ہلاکتیں بھی بہت زیادہ ہیں.لیکن برازیلین صدرجیر بولسونارو کا اصرار ہے یہ محض معمولی سا فلُو ہے اور اسکے لیے زیادہ پابندیوں کی ضرورت نہیں. ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ کورونا کو جتنا سنگین قرار دیا جارہا ہے اتنا ہے نہیں اور لوگوں کو اپنی سرگرمیاں جاری رکھنی چاہیں تاکہ معاشی گراوٹ پیدا نہ ہوسکے.ذمہ دار حلقوں کا کہنا ہے کہ برازیل کے ہسپتالوں میں جگہ نہیں لوگ گھروں میں مررہے ہیں.یونیورسٹی آف ساؤپالو کے ماہر وائرس پاؤلو برناڈ یو کا کہنا ہے کہ برازیل میں وبا کے خطرناک اختیار کرنے کی تمام وجوہات اور عوامل موجود ہیں.برازیل کی وزارت صحت کے مطابق اموات کی گنتی کا نظام بہت مستحکم ہے لیکن ھم نے کافی کیسز کو ٹریک کیا ہے.بعض برازیلین صوبوں میں متعلقہ گورنرز نے لاک ڈاؤن اور شیلٹر ان جیسے اقدام کرتے ہوئے لوگوں کو گھروں میں رکنے کا حکم دیا ہے.ماہرین کا کہنا ہے کہ آئندہ موسم سرما میں برازیل میں کورونا وائرس تباہی پھیلا سکتا ہے.

یہ بھی دیکھیں

اسلام آباد :خواتین کے عالمی دن کے موقع پر پی ٹی آئی رہنماء عثمان ڈار کا پیغام۔ 

اسلام آباد :خواتین کے عالمی دن کے موقع پر پی ٹی آئی رہنماء عثمان ڈار …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے