بدھ 25 ذوالحجہ 1442ﻫ - 4 اگست 2021

امریکی صدارتی الیکشن2020:التوا اور متبادل ووٹنگ کی باتیں زور پکڑنے لگیں

واشنگٹن ( پرو اردو)امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے کسی طور بھی صدارتی الیکشن کا التوا نہیں چاہتے نہ ہی وہ ڈاک کے ذریعے ووٹنگ کے حق میں ہیں. اسی دوران امریکہ کے عوامی، سماجی اور صحافتی حلقوں میں سماجی تفاوت( Social Distancing ) کے مستقبل میں بھی جاری رہنے کی صورت میں ڈاک کے ذریعے حق رائے دہی کے آپشن پر بحث زور پکڑنے لگا ہے.ایک سروے کے مطابق 22 سے 25فیصد امریکنز ووٹنگ بزریعہ ڈاک کے حق میں ہیں ان کا کہنا ہے کہ الیکشن ملتوی کیے جانے سے بہتر ہے ووٹرز کو ڈاک سے ووٹ ڈالنے کا آپشن دیا جائے.فیڈرل الیکشن کمشن اور دیگر ذمہ دار حلقوں کی جانب سے فی الحال الیکشن کے التوا یا متبادل طریقہ کار یا لسی بھی آپشن پر کوئی بات چیت نہیں ہورہی ہے تاہم کورونا کے سنگین اثرات اور مستقبل کے لیے احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی مسلسل ہدایات اور مختلف وارننگز کی روشنی میں الیکشن کے التوا سے لیکر متبادل ووٹنگ نظام پر زور و شور سے باتیں ہونے لگی ہیں.ڈیموکریٹس کی اکثریت کسی طور صدارتی الیکشن ملتوی کئے جانے کے کسی بھی آپشن کے حق میں نہیں ہیں. صدارتی امیدوار جو بائیڈن اور انکے ساتھیوں کو صدر ٹرمپ کی حالیہ عوامی ریٹنگ کے پیش نظر اپنی کامیابی کا مکمل یقین ہے اسلئے وہ الیکشن کا التوا نہیں چاہتے ہیں. دوسری طرف صدر ٹرمپ جنہوں نے ابتدا میں کورونا وائرس کو عام فلُو وائرس قرار دیکر اسےسنجیدہ نہیں لیا تھا اب کورونا کے جلد خاتمے کے لیے پُرامید ہیں.ان کا کہنا ہے کہ الیکشن کو التوا میں ڈالنے یا متبادل ووٹنگ کی بات کرنے والے جمہوریت کے دشمن ہیں. نومبر الیکشن وقت پر ہی ہونگے اور مروجہ طریقہ کار اپنایا جائے گا. ڈاک کے ذریعے ووٹنگ سمیت کسی متبادل کی تجویز یا آپشن زیر غور نہیں ہے.

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا حکم۔ 

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے