منگل 13 ربیع الاول 1443ﻫ - 19 اکتوبر 2021

ائمہ کیخلاف مقدمات قابل تشویش اوراشتعال انگیزی ہیں، مفتی محمد نعیم

ائمہ مساجد نے پہلے روز سے ہی وبا کا پھیلاؤروکنے کیلئے ہر قسم کا تعاون کیا

طے شدہ شرائط پر تراویح کا اہتمام کرنے والوں کیخلاف کارروائی سمجھ سے بالاتر ہے

کراچی، تعاون کے باوجود ائمہ مساجد کو گرفتار کرنا قابل تشویش ہے، طے شدہ شرائط کے مطابق مساجد میں تراویح اور نمازوں کا اہتمام کرنے والوں کیخلاف کاروائی سے سندھ حکومت کا حقیقی ایجنڈا بے نقاب ہورہاہے، ائمہ مساجد نے کورنا کی وباکے پھیلائو کے روکنے کیلئے ہر قسم کا تعاون کیا ،حکومت سندھ اپنے اقدامات کے ذریعے مذہبی طبقے کو مشتعل کرنا چاہتی ہے، جامعہ بنوریہ عالمیہ کے رئیس وشیخ الحدیث مفتی محمد نعیم نے کہاکہ کورونا ایک وبا ہے جس کے پھیلائو کوروکنے کیلئے احتیاط لازمی ہے، کرونا وائرس سے بچاو کیلئے سندھ حکومت کے اقدامات پر علما کرام نہ صرف تعاون کیا ہے بلکہ کلیدی کردار بھی ادا کر رہے ہیں مگر انتظامیہ کی جانب بعض مساجد کے ائمہ کو گرفتار کیا جارہاہے انہیں ایسے انداز میں پیش کیا جارہاہے جیسے وہ عادی اور خطرناک مجرم ہوں حکومت سندھ کا رویہ مذہبی طبقے کی نظر میں قابل تشویش ہے ، ہم سمجھتے ہیں ائمہ مساجد کے ساتھ اس طرح کا ناروا سلوک اشتعال انگیزی کا باعث بنے گا،انہوںنے کہاکہ اگر ایس اوپیز کے ساتھ مارکیٹیں اور دیگر جگہیں کھولنے کی اجازت دی گئی تو مساجد بھی کھولی گئیں جب معاملات طے ہوچکے ہیں تو انتظامیہ کو حق نہیں بنتا کہ وہ ائمہ مساجد کو بلاوجہ پریشان کریں ، انہوںنے کہاکہ جن مساجد میں ایس او پیز کا خیال نہیں رکھا جارہاہے ان کیخلاف کاروائی انتظامیہ کی ذمہ داری ہے لیکن اس طرح سے ائمہ کی توہین اور مساجد کے تقدس کی پامالی کی اجازت ہرگز نہیں دی جاسکتی ہے ۔

یہ بھی دیکھیں

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے لگا۔ 

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے