ہفتہ 10 ربیع الاول 1443ﻫ - 16 اکتوبر 2021

کورونا دنیا کو مزید بھوک اور غربت میں مبتلا کردے گا: 30 کروڑ خوراک کی قلت سے دوچار

واشنگٹن ( خصوصی رپورٹ)کورونا وائرس کی وجہ سے دنیا بھر میں خوراک کا سنگین بحران کا خدشہ پیدا ہوگیا ہے. جسکی وجہ سے عالمی سطح پر کشیدگی میں اضافہ ہورہا ہے.یونائیٹڈ نیشنز ورلڈ فوڈ پروگرام ( WFP) نے خبردار کیا ہے کہ اس سال کے اختتام پر دنیا بھر میں بھوک سے دوچار افراد کی 30 کروڑ تک جا پہنچے گی.جو کہ گزشتہ سال کے مقابلہ میں دوگنی ہے.WFP کے ڈائریکٹر ڈیوڈ بیسلے نے کہا کہ آنے والے مہینوں میں 40 کے لگ بھگ ممالک میں بھوک کی وجہ سے قحط کی سی صورتحال پیدا ہوجائے گی.تیل کی قیمتیں پہلے ہی گراوٹ کا شکار ہیں.سیاحت نہ ہونے کے برابر ہے اور بیرون ممالک سے زرمبادلہ بھیجنے کی شرح بہت سست ہوگئی ہے. لاکھوں گھرانوں کا انحصار انکے بیرون ملک رشتہ داروں اور پیاروں کی جانب سے ترسیل زر پر ہوتا ہے میں تیزی سے کمی ہوتی جارہی ہے.مسٹر بیسلے کا کہنا ہے کہ اس بات کا خطرہ ہے کہ Covid-19 سے کہیں زیادہ لوگ معاشی بدحالی کی وجہ سے موت کے منہ میں چلے جائیں گے.انٹرنیشنل فوڈ پالیسی ریسرچ انسٹی ٹیوٹ(IFPRI)کے تخمینے کے مطابق کورونا وائرس کی وجہ سے 150ملین یا 15 کروڑ سے زیادہ افراد انتہائی غربت سے دوچار ہوجائیں گے.IFPRI کے ریسرچ فیلو ڈیوڈ لیبورڈےکا کہنا ہے کہ ان میں سے نصف تقریباً 79ملین کے لگ بھگ افراد سب صحارا افریقہ سے تعلق رکھتے ہیں.امریکہ میں کورونا کی وجہ سے بیروزگاری اور معاشی بدحالی کا نیا طوفان کھڑا ھورہا ہے. پہلے تین کروڑ سے زیادہ لوگ بیروزگاری بینیفٹس کے لئےدرخواستیں دے چکے ہیں.جن میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے بڑی تعداد میں چھوٹی کمپنیاں بنکرپٹ ہوچکی ہیں ہزاروں بلکہ لاکھوں کی تعداد میں کمپنیاں اور افراد قرضوں کے لیے اپلائی کرچکے ہیں.

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا حکم۔ 

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے