بدھ 25 ذوالحجہ 1442ﻫ - 4 اگست 2021

سندھ حکومت 8 تاریخ تک ہر صورت کاروباری ایس او پیز کا اعلان کرے، تحریک انصاف کا مطالبہ

گزشتہ 12 سالوں میں 15ہزار اب کا بجیٹ تھا 2011 سے 18 ترمیم بھی ہے کوئی ترقی نہیں ہوئی

کراچی کے اندر سرکاری اسپتالوں میں 233 وینٹیلیٹر ہیں۔ ڈاکٹر فرقان کو ایک وینٹیلیٹر کیوں نہیں ملا

وزیر اعلیٰ عوام کو جواب دیں وفاق کی جانب سے اتنا سامان ملنے کے باوجود ڈاکٹر کیوں محروم ہیں

سندھ حکومت 8 تاریخ تک ہر صورت کاروباری ایس او پیز کا اعلان کرے، تحریک انصاف کا مطالبہ

9 تاریخ کو کاروباری رہنماوں کی اپنی ایس اوپیز پر ہم ان کے ساتھ کھڑے ہونگے، پی ٹی آئی کا فیصلہ

کراچی، پی ٹی آئی مرکزی رہنما و پارلیمانی لیڈر سندھ اسمبلی حلیم عادل شیخ نے سندھ کی موجودہ صورتحال کے پیش نظر میڈیا کے لئے اپنے جاری کردہ وڈیو بیان میں کہا ہے کہ گزشتہ دو روز سے افسردہ ہیں کرونا سے ہونے والی اموات المناک ہیں۔ ایک مسیحا جب اپنے فرائض انجام دہی میں مصروف تھا تو ان کے پاس پی پی ای مکمل نہیں تھی۔ جبکہ این ڈی ایم نے سندھ کو ایک لاکھ 48 ہزار پی پی ایز دی چکا ہے۔ ایک مسیحا ڈاکٹر فرقان دو گھنٹے تک ایمولنس میں وینٹیلیٹر ملنے کا انتظار کرتا رہا لیکن دو دن تک نہیں دیا گیا۔ آج سندھ کے سولہ اضلاع کی اسپتالوں میں وینٹیلیٹر موجود ہی نہیں ہے۔ گزشتہ 12 سالوں میں 15ہزار اب کا بجیٹ تھا 2011 سے 18 ترمیم بھی ہے گزشتہ سال 140 ارب صحت کا بجیٹ تھا۔ اتنا بجیٹ ہونے کے باوجود بھی وینٹیلر نہیں خریدے گئے نہ اسپتال بہتر ہوئے۔ پوری سندھ کی سرکاری اسپتالوں میں 384 وینٹیلیٹر ورکنگ حالت میں بتائے جارہے ہی۔ سندھ کی پرائیوٹ اسپتالوں میں 305 وینٹیلیٹر بتائے جارہے ہیں۔ 689 ٹوٹل ہوتے ہیں جس میں سے کراچی کے اندر سرکاری اسپتالوں میں 233 پرائویٹ اسپتالوں میں 305 وینٹیلیٹر ہیں۔ اتنی بڑی تعداد میں وینٹیلیٹر ہونے کے باوجود اگر ڈاکٹر فرقان کو وینٹیلیٹر نہیں ملا۔ یہ سندھ حکومت کی نااہلی ہے صرف خوف پھیلایا جارہا ہے۔ ایک مسیحا کو وینٹیلیٹر نہ دے سکے وزیر اعلی مگر مچھ کے آنسوں نکالتے ہیں۔ تحقیقات تو سندھ کے حکمرانوں کے خلاف ہونے چاہیے جنہوں نے رونا دھونا مچایا ہوا تھا۔ ایک وزیر کہتا ہے پانچ لاکھ خاندانوں کے راشن دیا وزیر اعلی کہتے ہیں ساڑےتین لاکھ لوگوں کو دیا۔ لیکن راشن تو آن گرائونڈ کسی نہیں ملا عوام آج بھی سراپا احتجاج ہے۔ تین مئی کو سندھ میں 18 مریض وینٹیلیٹر پر تھے 2 مئی کو 16 تھے۔ جس نے ڈاکٹر نے وینٹیلیٹر مانگا اس دن صرف 18 لوگ وینٹیلیٹر پر تھے لیکن پھر بھی مسیحا کو وینٹیلیٹر نہیں ملا۔ مراد علی شاہ اس کا جواب دیں اتنے وینٹیلیٹر کاغذوں میں ہونے کے باوجود کیوں نہیں ڈاکٹر کو وینٹیلیٹرملا وزیر اعظم سے کہوں کا جس طرح ٹڈی دل فصلوں کو تباہ کرتا ہے اسی طرح پ پ دل نے سندھ کو تباہ کیا ہے۔ ڈاکٹر فرقان کے واقعے پر بڑے پئمانے پر انکوائری کی جائے۔ وزیر اعلی بڑے کمروں میں بیٹھ کر پریس کانفرنس کر کے جھوٹے دعوے کرتے ہیں۔ ہم عوام میں جاتے ہیں جاتے رہیں گے عوام کے مسائل کی آواز اٹھائیں گے۔ وزیر اعلی کو جب بھی موقعہ ملتا ہے خوف و حراس پھیلاتے ہیں۔ ایک سازش کی تحت پاکستان کی معیشیت کو تباہ کیا جارہا ہے۔ وفاق کی طرف سے 8 لاکھ سے زیادہ سرجیکل ماسک جس میں این 95 دو لاکھ تیس ہزار شامل ہیں دیئے گئے۔ 77 ہزار ٹیسٹنگ کٹس کے ساتھ دیگر ساز سامان بھی مل دیا گیا ہے۔ اتنا کچھ ملنے کے باوجود اتنی نااہلی کیوں وزیر اعلی کو جواب دینا پڑے گا۔

یہ بھی دیکھیں

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے لگا۔ 

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے