اتوار 1 جمادی الاول 1443ﻫ - 5 دسمبر 2021

وائیٹ ہاؤس کے تمام عہدیداروں اور افسران کو ماسک پہننے کا حکم : صدرنائب صدر بدستور انکاری

واشنگٹن( پرو اردو)وائیٹ ہاؤس کے تمام سٹاف کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ باقاعدگی سے ماسک پہنا کریں. یہ حکم وائیٹ ہاؤس کے دو سٹاف ممبرز کے کورونا وائرس کا شکار ہونے کی خبر منظر عام پر آنے کے بعد دیا گیا ہے.وائیٹ ہاؤس کے ایک اعلی عہدیدار نے اس بات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ تمام ممبران کو میمو جاری کردیا گیا ہے جس میں ان سے کہا گیا ہے کہ ڈیوٹی کے دوران انہیں لازمی ماسک پہن کر رہنا ہوگا البتہ اپنے ڈیسک پر کام کرتے وقت وہ ماسک پہننے کی شرط سے مستثنٰی ہونگے.عہدیداروں سے یہ بھی کہا گیا ہے کہ وہ غیر ضروری طور پر ایگزیکٹو دفاتر بھی نہیں جایا کریں جہاں صدر ڈونالڈ ٹرمپ اب بھی روزانہ اپنے فرائض انجام دے رہے ہیں.میمو میں کہا گیا ہے کہ ویسٹ ونگ آنے جانے والے تمام افراد سے کہا گیا ہے کہ ماسک کی پابندی ضروری ہے.یہ بھی کہا گیا ہے کہ انتہائی ضروری کاموں کے علاوہ ویسٹ ونگ جانے سے گریز کیا جائے.یہ حکم نامہ نائب صدر مائیک ہنس کی پریس سکریٹری اور کورونا ٹاسک فورس کی ترجمان کیٹی ملر کورونا وائرس میں مبتلا ہونے کے ردعمل میں جاری کیا گیا ہے.اس سے قبل صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے ذاتی خدمتگاروں میں سے ایک ملازم بھی کورونا کا شکار ہوگیا تھا.یہ واضح نہیں ہوسکا کہ ماسک پالیسی کا اطلاق صدر ٹرمپ اور نائب صدر مائیک ہنس پر ھوگا یا نہیں کیونکہ دونوں بڑی شخصیات کو اب تک ماسک پہنے نہیں دیکھا گیا.میمو کے اجرا کے فورا بعد نائب صدر کو وائیٹ ہاؤس میں گورنرز کے ساتھ ویڈیو کالنگ کانفرنس کے لئے آفس جاتے ہوئے بغیر ماسک کے دیکھا گیا تھا. مذید برآں اپنی پریس سیکریٹری کا کورونا ٹیسٹ پازیٹو آنے کے باوجود انہوں نے 14 روز کےلئے قرنطینہ (Quarantine) میں جانے سے انکار کردیا ہے کیونکہ وہ روزانہ کورونا ٹیسٹ کرواتے ہیں.جبکہ فوڈز اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن کے چئیرمین سٹیفن ھان اور سینٹر فار ڈیزیز اینڈ پروینشن (CDC) رابرٹ فیلڈ اور وائیٹ ہاؤس کورونا ٹاسک فورس کے رکن ڈاکٹر انتھونی فاؤچی جو کیٹی ملر کے سارے رابطے میں رہے ہیں 14 دن کے لئے سیلف آئسولیشن میں چلے گئے ہیں.

یہ بھی دیکھیں

وزیراعلیٰ سندھ سیدمراد علی شاہ کا کورونا وائرس کی صورتحال سے متعلق بیان۔ 

وزیراعلیٰ سندھ سیدمراد علی شاہ کا کورونا وائرس کی صورتحال سے متعلق بیان۔ گزشتہ 24 …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے