اتوار 4 شوال 1442ﻫ - 16 مئی 2021

ریپبلیکن سینیٹر نے لاکھوں ڈالرز کے سینیٹائزر غلط طریقے سے بیچ دئیے : تحقیقات کا سامنا

واشنگٹن ڈی سی( پرو اردو)نارتھ کیرولائینہ سے ریپبلیکن سینٹر رچرڈ بور( Richards Burr)کے خلاف ہینڈ سینیٹائزر کا ذخیرہ اور انہیں مہنگے داموں فروخت کرنے کے الزام میں کارروائی شروع کردی گئی. جسٹس ڈیپارٹمنٹ کے مطابق ایف بی آئی نے رچرڈز بور کے گھر کی تلاشی کے وارنٹ حاصل کرکے ان کا سیل فون قبضے میں لے لیا ہے. جسٹس ڈیپارٹمنٹ نے سینیٹر بور کے سٹاک ٹرانزیکشن کی تحقیقات شروع کردی ہیں کہ انہوں نے سٹاک کیسے جمع کئے.آیا انہوں نے اس قانون کی خلاف ورزی تو نہیں کی جس کے تحت اندرونی معلومات کی روشنی پر اراکین کانگریس پر تجارت اور خرید و فروخت پر پابندی ہے.سینٹر بور نے کرونا وائرس کے شدت پکڑتے ہی مارکیٹ کریش ہونے سے پہلے 1.7 ملین ڈالر کے سینیٹائزر کے سٹاک فروخت کئے تھے.وہ سینیٹ کی انٹیلجنس کمیٹی کے ممبر ہیں اور چند قانون سازوں میں سے ایک تھے جنہیں محکمہ صحت کے اعلی حکام کی طرف سے کورونا وائرس پر بریفنگ دی گئی تھی.بعد ازاں میڈیا پر خبریں آنے کے بعد ریپبلیکن سینیٹر نے اپنے سٹاک تلف کردئے تھے.سینیٹر بور کا کہنا ہے انہوں نے میڈیا اطلاعات پر ٹرانزیکشن کی تھی اور ساتھ ہے ساتھ سینیٹ کی اخلاقی کمیٹی کو ان کی سیل کا جائزہ لینے کی دعوت دی ہے.

یہ بھی دیکھیں

وزیراعلیٰ سندھ سیدمراد علی شاہ کا کورونا وائرس کی صورتحال سے متعلق بیان۔ 

وزیراعلیٰ سندھ سیدمراد علی شاہ کا کورونا وائرس کی صورتحال سے متعلق بیان۔ گزشتہ 24 …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے