پیر 13 صفر 1443ﻫ - 20 ستمبر 2021

الیکشن 2020: 23 فیصد ریپبلیکنز صدر ٹرمپ کو دوبارہ صدر دیکھنا نہیں چاہتے

نیویارک ( محمد فرخ)کورونا وائیرس ( Covid-19)سے نمٹنے میں صدر ٹرمپ کی کارکردگی ان کے مخالفین میں تو تنقید کا باعث ہے ہی انکے اپنے بھی ان سے مکمل طور پر مطمئین نہیں ہیں. اس سال نومبر میں صدارتی الیکشن میں امریکی عوام کے نزدیک صدر کے انتخاب کے لئے کارکردگی کا سب سے بڑا معیار Covid-19 ہوگا. صدر ٹرمپ اب تک وائرس سے نمٹنے کےلئے امریکی عوام کو کوئی ٹھوس لائحہ عمل دینے میں ناکام رہے ہیں انہوں نے نائب صدر مائیک پنس کی صدارت میں وائیٹ ہاؤس کورونا ٹاسک تشکیل تو دی ہے لیکن ٹاسک فورس کے پلیٹ فارم سے پریس بریفنگز کے دوران وہ بیشتر وقت یا تو صحافیوں سے الجھتے رہے یا پھر کورونا وائرس سے صحتیابی کے لئے اپنے طور سے علاج تجویز کرتے رہے کبھی کسی دوا پر زور دیتے ہیں تو کبھی کسی ویکسئین کی نوید سناتے ہیں. لاک ڈاؤن کے خاتمے اور معیشت کو کھولنے کے حق میں ہیں مگر کوئی قابل عمل حل نہیں کہ کس طرح یہ سب ممکن ہے. ٹاسک فورس کے اہم رکن ڈاکٹر انتھونی فاؤچی سے انکے سنگین اختلافات بھی اسی بات پر ہے کہ وہ لاک ڈاؤن کے خاتمے اور سماجی سرگرمیوں کی بحالی کے حق میں بلکل بھی نہیں ہے. ان وجوہات کی بنا پر صدر ٹرمپ کی عوامی مقبولیت کا گراف دن بدن گرتا جارہا ہے. اب تو ریپبلیکنز بھی ان سے نالاں ہیں.ایک معروف ریسرچ کمپنی راسموسن(Rasmussen)کے تازہ ترین پول سروے کے مطابق 23 فیصد ریپبلیکن ووٹرز آیندہ الیکشن میں صدر ٹرمپ کو پارٹی کا امیدوار نہیں دیکھنا چاہتے.تاہم 70فیصد صدر ٹرمپ کے حق میں ہیں جبکہ 7 فیصد ریپبلیکنز کسی نتیجہ پر نہیں پہنچ پائے.دوسری طرف انکے ڈیموکریٹک حریف جو بائیڈن کو بھی اپنی جماعت کے حامیوں کی جانب سے مزاحمت کا سامنا ہے.28 فیصد ڈیموکریٹک ووٹرز جو بائیڈن کی جگہ کسی اور ڈیموکریٹ رہنما کو صدارتی الیکشن میں امیدوار کے طور پر دیکھنا چاہتے ہیں.جبکہ 54 فیصد جو بائیڈن کے حق میں ہیں.

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا حکم۔ 

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے