ہفتہ 5 رمضان 1442ﻫ - 17 اپریل 2021

سرکاری نیوز ادارہ!وائس آف امریکہ:صدر ٹرمپ کی میڈیا وار کا نیا شکار

واشنگٹن( خصوصی رپورٹ)ویسے تو امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ کسی بھی میڈیا پر تضحیک کی حد تک تنقید کا کوئی موقع ہاتھ سے نہیں جانے دیتے نہیں حتی کہ کرونا ( Covid-19)جیسی بحرانی صورتحال میں بھی وہ پریس بریفنگز کے دوران میڈیا پر گرجنے برسنے اور جھگڑالو ساس کی طرح انہیں لعن طعن سے گریز نہیں کررہے . تاہم وائس آف امریکہ جیسے معزز امریکی سرکاری میڈیا کو نشانہ بناکر انہوں نے سب کو حیرت زدہ کردیا.وائس آف امریکہ کا قیام دوسری جنگ عظیم کے دوران امریکی حکومت کے فنڈز سے عمل میں آیا تھا جس کا بنیادی مقصد دنیا بھر آزاد و خودمختار خبروں اور امریکی اقدار کا فروغ تھا.ایسوسی ایٹڈ پریس کی ایک رپورٹ کے مطابق صدر ٹرمپ اور انکے حامیوں نے وائس آف امریکہ پر شرمناک رپورٹنگ کاالزام عائد کیا ہے جس کی وجہ سے انکے لئے اس ایجنسی کو چلانے کا انتخاب مشکل ھوگا جو وائس آف امریکہ اور اس سے متعلقہ شعبوں کا جائزہ لیتی ہے.وائس امریکہ کے خلاف ٹرمپ اینڈ کمپنی کی یہ جنگ کانگریس میں گرما گرم بحث کا نکتہ آغاز بن بن سکتی ہے جس کے باعث VOA جیسے بین القوامی نشریاتی ادارے کے مستقبل پر خاطر خواہ اثر پڑے گا.اسی دوران سینٹ کی فارن ریلشنگ کمیٹی میں گزشتہ جمعرات ( 14مئی) کو یوایس ایجنسی فار گلوبل میڈیا(USAGM) کی سربراہی کے لئے صدر ٹرمپ کی نامزدگی پر ووٹنگ شیڈول تھی جسے ملتوی کردیا گیا ہے.یہ ایجنسی وائس آف امریکہ اور اسکے ماتحت ادارے ریڈیو فری ایشیا ،ریڈیو فری یورپ،کیوبا کے لئے مخصوص ریڈیو مارتی کا نظام چلاتی ہے.ڈیموکریٹس نے صدر ٹرمپ کی نامزدگی پر اعتراض کیا ہے تاہم ریپبلیکنز کو امید ہے کہ سینیٹ کمیٹی نامزدگی کی توثیق کردے گی.ڈیموکریٹس کو خدشہ ہے کہ صدر ٹرمپ کے نامزد کردہ رجعت پسند فلمساز اور ماہر تعلیم مائیکل پیک وائس آف امریکہ کو صدر ٹرمپ کے لئے پروپیگنڈہ کا ذریعہ بنادیں گے.ادارے کا سالانہ بحٹ 200 ملین ڈالرز ہے جو امریکی عوام کے ٹیکسوں سے ادا کیا جاتاہے.اگرچہ مسٹر پیک نے ڈیموکریٹس کی اس تشویش کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ایسا ہرگز نہیں ہونے دیں گے تاہم حالیہ شورشرابہ نے اس تشویش کو ہوا دی ہے.صورتحال کو نزدیک سے جائزہ لینے والے وائس آف امریکہ کے حوالے سے پیدا ہونے والی اس تلخی سے خاصے مایوس ہیں. مایوسی کا اظہار کرنے والوں میں ایجنسی اور وائس آف امریکہ میں اصلاحات کے حامی بھی شامل ہیں جو ایجنسی کے گورننگ قواعد میں بھی تبدیلیوں کے حق میں ہیں تاکہ نئے سربراہ بورڈ کو صرف نظر کرکے پالیسی ساز فیصلے کرسکے.

یہ بھی دیکھیں

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کینسر کے مریضوں کو مفت ادویات کی فراہمی کیلئے فنڈز کے اجراء کی منظوری دے دی

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کینسر کے مریضوں کو مفت ادویات کی فراہمی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے