پیر 19 ربیع الاول 1443ﻫ - 25 اکتوبر 2021

ڈاکٹر معید کا مقبوضہ کشمیر میں COVID-19 کی آڑ میں انسانی حقوق کی پامالیوں کی تحقیقات کے لئے دنیا سے مطالبہ

اسلام آبا، مودی حکومت معصوم کشمیریوں پر ظلم و ستم بڑھانے کے لئے کوویڈ 19 بحران کی عالمی خلفشار کا استعمال کررہی ہے۔ معاون خصوصی برائے قومی سلامتی اور اسٹریٹجک پالیسی پلاننگ سیل ڈاکٹر معید یوسف نے کہا کہ عالمی برادری، اقوام متحدہ اور صحت سے متعلق بین الاقوامی تنظیموں کو ہندوستان کے مقبوضہ جموں و کشمیر میں انسانی حقوق کی فوری صورتحال کا سنجیدہ نوٹس لینے کی ضرورت ہے۔ ڈاکٹر معید یوسف نے یہ بات برطانیہ کے دارالحکومت لندن میں آرگنائزیشن فار کشمیر کولیشن (او سی سی) کے زیر اہتمام "کوویڈ 19 کشمیر میڈیا کانفرنس” کے عنوان سے بین الاقوامی میڈیا کانفرنس میں کہی۔ چوتھا جنیوا کنونشنز ہندوستان کو پابند کرتا ہے کہ وہ IOK میں طبی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لئے بین الاقوامی امدادی تنظیموں تک رسائی فراہم کرے۔

ڈاکٹر یوسف نے روشنی ڈالی کہ حکمران بی جے پی کی طرف سے مسلمانوں اور خصوصا کشمیریوں کے خلاف فروغ پائے جانے والے فاشسٹ نظریے کو عالمی میڈیا کو ہندوستان کو نئے سرے سے دیکھنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہٹلر کے بعد ابھی تک فاشیزم نے علاقائی اور عالمی امن کو اس قدر سنگین خطرہ نہیں پہنچایا ہے۔

گذشتہ سال 5 اگست سے مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی طرف سے یکطرفہ کارروائیوں کے سلسلے کا ذکر کرتے ہوئے ، ڈاکٹر یوسف نے ہندوستان کی ریاستی سرپرستی والی کشمیر میں حالیہ بڑھتی ہوئی وارداتوں کو بیان کیا جہاں جعلی مقابلوں میں 33 سے زیادہ نوجوان کشمیریوں کو شہید کیا گیا ہے۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ کشمیریوں کے حق خود ارادیت کے لئے جائز جدوجہد IOJK میں بھارتی 900،000 سکیورٹی فورسز کے ذریعہ بھارت کی طرف سے ہونے والے پرتشدد مظالم کا ردعمل ہے۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ پاکستان تمام بین الاقوامی فورموں پر مسئلہ کشمیر کے لئے سفارتی اور سیاسی حمایت جاری رکھے گا۔

ڈاکٹر معید یوسف نے پاکستان کے اس موقف کا اعادہ کیا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادیں ہی تنازعہ کشمیر کو حل کرنے کا واحد طریقہ کار ہیں اور اس سے پہلے کہ کوئی واضح اور معنی خیز مکالمہ ممکن ہو ، بھارت کو 05 اگست 2019 کے عمل کو واپس کرنا ہوگا۔ انہوں نے خبردار کیا کہ بھارت اپنے توسیع پسندانہ منصوبوں کو جواز بنانے کے لئے پاکستان کے خلاف جھوٹے آپریشن کا استعمال کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی رہنماؤں کے متنازعہ بیانات اس بات کا اشارہ کرتے ہیں کہ بھارت کشمیر کے اندر پیدا کیے مسائل کا الزام کسی اور پر ٹھہرانا چاہتا ہے۔

کانفرنس میں معروف ادیبوں اور کشمیر کے ماہرین اور عالمی میڈیا کے ممتاز اداروں کے عملہ نے خوب شرکت کی۔

یہ بھی دیکھیں

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے لگا۔ 

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے