اتوار 4 شوال 1442ﻫ - 16 مئی 2021

پولیس سے خصوصی قانونی اختیارواپس لینے کے لیے کانگریس میں بل

واشنگٹن ( پرو اردو رپورٹ)ایسے وقت میں جب امریکہ سیاہ فام نوجوان جارج فلائڈ کے قتل کے ردعمل میں کشیدگی میں گھرا ہوا ہے امریکی کانگریس میں پولیس کو حاصل اس قانونی تحفظ کے خاتمے کا بل پیش کرنے کی تیاری کی جارہی ہے جس کے تحت پولیس کے مبینہ غیر قانونی اقدام کے خلاف سول لاء سوٹ دائر کرنا آسان ہوجائے گا. پولیس کو حاصل قانونی اختیار کی وجہ سے اس کے غیر آئینی و غیر قانونی اقدامات کے خلاف عدالتوں سے رجوع کیا جاسکے گا.مشی گن سے آزادکنزرویٹو کانگریس مین جارج آماش نے بل پیش کیا ہے جسے ڈیموکریٹس کی مکمل حمایت حاصل ہے.Ending Qualified Immunity Act کے تحت لوگوں کو انسانی حقوق کے تحفظ کی عدالتی تشریح کے باوجود پولیس کو طاقت کے استعمال روکنا ممکن نہیں.جارج فولائیڈ کا پولیس قتل محکمہ پولیس کی جانب سے قابل مذمت کارروائیوں میں ایک اور ناخوشگوار واقعہ ہے.جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے.انہوں نے اپنے ساتھی اراکین کانگریس سے کہا کہ ایسا اسلئے بھی ہوتا رہتا ہے کہ پولیس کو قانونی،سیاسی اور ثقافتی طور پر جداگانہ حیثیت حاصل ہے.اس روایت کو تبدیل کیا جانا ضروری ہے تاکہ پولیس تشدد کا خاتمہ ہوسکے. منی سوٹا سے ڈیموکریٹک کانگریس وومین الہان عمر نے بل کی حمایت کا عندیہ دیا ہے.آماش بل سے پہلے ہی جارج فلائیڈ کے قتل کے حوالے سے کانگریس کے دونوں ایوانوں میں ڈیموکریٹس کے متعدد بل زیر غور ہیں.واضح رہے کہ جارج فلائیڈ نامی سیاہ فام نوجوان کو منیاپلس میں ایک سفید فام پولیس آفیسر نے اسکی گردن اپنے گھٹنے تلے بری طرح دبادی تھی جس کی وجہ سے اسکی موت واقعی ہوگئی تھی جسے قتل قرار دیا گیا ہے.راہ چلتے کسی نے ویڈیو بناکر اسے وائرل کردیا جس کے بعد امریکہ بھر میں مظاہرے اور تشدد پھوٹ پڑے ہیں.

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا حکم۔ 

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے