جمعرات 26 ذوالحجہ 1442ﻫ - 5 اگست 2021

نیویارک کے گورنر اور مئیر کے درمیان پھر ٹھن گئی۔ مئیر کا نیشنل گارڈز کئ تعیناتی سے انکار، گورنر کی مئیر پر تنقید

نیویارک( نیوز ڈیسک)نیویارک سٹی کے دو بوروز مین ہٹن اور برونکس میں لوٹ مار اور توڑ پھوڑ اور مظاہروں کے دوران اشتعال انگیزی پھیلانے کے الزام میں پیر اور منگل کی درمیانی شب کو ایک ہزار کے قریب افراد کو گرفتار کرلیا گیا ہے.جبکہ پابچ دن کے دوران چار سے زائد افراد حراست میں لئے جاچکے ہیں.نیویارک سٹی میں کرفیو کا دورانیہ اور عرصہ بڑھا دئیے گیے ہیں منگل سے ہر شام 8 بجے سے صبح پابچ بجے تک کرفیو نافذ اتوار 7 جون تک نافذ العمل رہے گا.اسی دوران مئیر بل ڈی بلازیو نے نیویارک سٹی میں نیشنل گارڈز کی تعیناتی سے انکار کردیا ہے اور کہا ہے کہ اس سے مذید بگاڑ پیدا ہوگا.مظاہرے مجموعی طور پر پرامن رہے مگر پیر کی رات گئے مظاہرین میں سے بعض اشتعال میں آگئے اور انہوں نے دکانوں کے شیشے توڑ دئیے مشہور زمانہ برینڈ کے سٹورز میں لوٹ مار مچائی. جس کے بعد نیویارک سٹی کے مئیر کو کرفیو میں توسیع کا اعلان کرنا پڑا.مین ہٹن میں جابجا سٹورز کے ٹوٹے دروازے کھڑکیاں اور شیشوں کے ٹکڑے بکھرے پڑے دکھائی دے رہے . آگ کے شعلے اور مختلف اشیاء سٹورز کے فرش پر ادھر ادھر پھیلے ہوئے تھے.مناظر بدترین تباہی کا نقشہ پیش کررہے تھے. منی سوٹا میں افریقی امریکی جارج فلائیڈ کی پولیس کے ہاتھوں ہلاکت کے ردعمل میں پورے امریکہ میں مظاہرے اور ہنگامے برپا ہیں جس لے دوران لوٹ مار بھی جاری ہے.ادھر نیویارک کے گورنر اینڈریو کومو نے مظاہروں سے نمٹنے نیویارک سٹی کے اقدام کو شرمناک قرار دیتے ہوئے مئیر سٹی بل ڈی بلازیو اور NYPD پر الزام لگایا کہ وہ اپنی ذمہ داریاں نبھانے میں ناکام رہے ہیں.گورنر کا کہنا ہے کہ میں سمجھتا ہوں کہ مئیرمسائل کو سمجھنے میں ناکام رہے ہیں.وہ یہ اندازہ بھی لگانے میں ناکام رہے کہ مسائل کتنے عرصہ تک برقرار رہیں گے.گورنر نے کہا کہ میں سمجھتا ہوں کہ نیوریاک سٹی میں مزید پولیس تعینات کرنا ضروری نہیں کیونکہ پہلے ہی نیوریاک میں پیٹرولنگ دوگنی ہے.گورنر کے بیان کے فوری بعد مئیر بلازیو کی پریس کانفرنس منعقد ہوئی تاہم انہوں نے گورنر کومو کی سخت تنقید کا جواب دینے سے گریز کیا.

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا حکم۔ 

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے