ہفتہ 10 ربیع الاول 1443ﻫ - 16 اکتوبر 2021

مقتول سیاہ فام جارج فلائیڈ کے مجرمانہ ریکارڈ کی بازگشت

مِنی اپلس/منی سوٹا( پرو اردو)ایک طرف امریکہ بھر میں ریاست منی سوٹا میں پولیس کے ہاتھوں ہلاک ہونے والے سیاہ فام نوجوان جارج سے اظہار یکجہتی اور انصاف کے لئے امریکہ بھر میں مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے دوسری طرف منیاپلس پولیس یونین کے سربراہ نے مظاہروں کو دہشت گردی کے مترادف قرار دیتے ہوئے جارج فلائیڈ پر عادی مجرم ہونے کا الزام عائد کیا ہے.انہوں نے کہا کہ جارج فلائیڈ کے مجرمانہ ریکارڈ کو مدنظر رکھنا چاہئے اسکے قتل کے خلاف ہونے والے مظاہرے دراصل نسل پرستی کے خاتمے کی نہیں بلکہ دہشت گردی کی تحریک ہے.پولیس یونین کے صدر باب کرول نے یونین کے ممبران کے نام ایک خط میں لکھا کہ جو کچھ عوام سے چھپایا جارہا ہے وہ جارج فلائیڈ کا پرتشدد مجرمانہ ریکارڈ ہے.نہ ہی میڈیا اس پر توجہ دیتا ہے.انہوں نے کہا کہ ڈکیتی اور تشدد کے کیس میں 2009 میں پانچ سال کے لئے جیل بھیج دیا گیا تھا.جبکہ اس سے قبل وہ چوری چکاری سے لیکر منشیات رکھنے کے متعدد کیسز میں قصور وار قرار پا چکا تھا.فلائیڈ 25 مئی کو منی سوٹا میں اسوقت ہلاک ہوگیا تھا جب ڈیرک شاون نامی ایک پولیس آفیسر لگ بھگ 9 منٹ تک اسکی گردن پر اپنا گھٹنا ٹکائے بیٹھا رہا جسکی وجہ سے جارج فلائیڈ کی سانس رک لئی اور اسکی موت واقع ہوگئی.پولیس نے 46 سالہ سیاہ فام کو ایک 20 ڈالرکا جعلی نوٹ کیش کرانے کی کوشش کے دوران حراست میں لے لیا گیا تھا.مسٹر کرول نے احتجاجی مظاہروں کو دہشت گرد تحریک سے موسوم کرتے ہوئے کہا کہ اسکی منصوبہ بندی کافی پہلے سے جاری تھی. انہوں نے کہا شہر کے بعض مسائل کے بنیادی وجہ حکام کا پولیس کی ضروریات کا خیال نہ رکھنا ہے.انہوں نے کہا کہ منیاپلس کے لیڈروں نے ہماری پولیس کا حجم کم کرکے فنڈز کمیونٹی کے متحرک علمبرداروں کو منتقل کردئیے جو پولیس مخالف ایجنڈا پر سرگرم عمل ہیں.ہمارے سربراہ نے 400 پولیس افسروں کی بھرتی کی درخواست کی جسے مکمل طور پر مسترد کردیا گیا. جس کی وجہ سے پرتشدد مظاہروں کو ہوا ملی.یونین کے سربراہ نے اس عزم کا اظہار کیا کہ جارج فلائیڈ کے قتل کے الزام کا سامنا کرنے والے پولیس افسر کو بھرپور قانونی مدد فراہم کی جائے گی.پولیس افسر ڈیرک شاوِن اور دیگر اہلکاروں کے خلاف تفتیش جاری ہے.انہوں نے کہا چاروں معطل افسروں کے مقدمات کی پیروی کے لئے چار وکلاء دفاع کی خدمات حاصل کرلی گئی ہیں.

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا حکم۔ 

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے