پیر 30 شعبان 1442ﻫ - 12 اپریل 2021

منی سوٹا کا امریکی مسلمان بزنس مین :محمود میالہہ جس کی شکایت پر پولیس نے جارج فلائیڈ کو گرفتار کیا

منیاپلس( خصوصی رپورٹ) منی سوٹا کے شہر منیاپلس کے ایک سٹور مالک نے جارج فلائیڈ کے خلاف شکایت پر شرمندگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر انہیں معلوم ہوتا کہ ایک معمول کی کاروائی کا نتیجہ اس قدر سنگین اور بدترین ہوگا وہ کبھی پولیس کو جعلی نوٹ استعمال کرنے کی کوشش پر جارج فلائیڈ کی شکایت نہ کرتے. محمود ابو میالے نے کہا کہ انہوں نے ریاست کی سرکاری پالیسی پر عملدرآمد کیا تھا جس کے مطابق سٹور مالکان یا عملہ پر لازم ہے کہ جعلی کرنسی نوٹ کی موجودگی یا کسی جانب سے استعمال کرنے کی کوشش پر قانون نافذ کرنے والے اداروں یا افسروں کو مطلع کیا جائے.کپ فوڈز کے مالک محمود ابو میالے کے سٹور سے جارج فولائیڈ نے 20 ڈالر کا جعلی نوٹ کیش کرانے کی کوشش کی تھی جس پر محمود نے فورا پولیس کو مطلع کردیا. جس نے جارج کو حراست میں لے کیا لیکن ڈیرک شاوِن نامی ایک پولیس اہلکار نے جارج فلائیڈ کی گردن لگ بھگ 9 منٹ تک اپنے ایک گھٹنے سے دبائے رکھی جسکی وجہ سے جارج فلائیڈ سانس نہ لے سکا اور اسکی موت واقع ہوگئی. اس واقعہ کے بعد امریکہ بھر میں مظاہرے اور احتجاجی ریلیاں جاری ہیں.مسٹر محمود نے اپنی ایک فیس بک پوسٹ پر لکھا ہے کہ ہمیں بہت زیادہ رنج و الم ہے اور ساتھ ہی ساتھ پولیس کے اس ظالمانہ حرکت پر سخت غصہ اور اشتعال بھی ہے.انہوں نے کہا کہ پولیس اہلکاروں کی طرف سے طاقت کے اس وحشیانہ استعمال کی کوئی توجیہ پیش نہیں جاسکتی. انہوں نے کہا کہ اس بدترین واقعہ نے ہمیں آیندہ پولیس کے ساتھ نمٹنے کے لئے ایک اہم پیغام دیا ہے.انہوں نے کہا کہ وہ آیندہ کبھی بھی جعلی نوٹ کی اطلاع پولیس کو نہیں دیں گے. انہیں زرا بھی اندازہ ہوتا کہ انکی شکایت کتنی بڑی مصیبت کھڑی کرسکتی ہے وہ ایسا سوچتے بھی نہیں.انہوں نے کہا کہ ایک مروجہ قواعد پر عملدرآمد کرکے ہم نے امریکہ بھر میں کمیونٹیز کو خطرات سے دوچار کردیا جب تک پولیس تشدد ترک نہیں کرتی اشتعال انگیزی ختم نہیں ہوگی.

یہ بھی دیکھیں

اسلام آباد :خواتین کے عالمی دن کے موقع پر پی ٹی آئی رہنماء عثمان ڈار کا پیغام۔ 

اسلام آباد :خواتین کے عالمی دن کے موقع پر پی ٹی آئی رہنماء عثمان ڈار …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے