منگل 1 رمضان 1442ﻫ - 13 اپریل 2021

کورونا وائرس اور عمر کا تعلق

ایک ماہر کا کہنا ہے کہ اگر کورونا وائرس کی ویکیسن نہیں بن پاتی تو ہماری سوسائٹی کو اس موضوع پر منطقی بحث کرنا ہو گی کہ کم ازکم کتنی عمر اس وائرس میں مبتلا ہونے کے لیے کم خطرناک ہو گی۔

کارل ہینیگن کا تعلق یونیورسٹی آف آکسفورڈ سے ہے وہ کہتے ہیں کہ کووڈ 19 کا عمر رسیدہ افراد پر غیر متناسب انداز میں اثر کر رہا ہے ایسے ہی جیسے موسمی زکام کرتا ہے۔

سائنس میڈیا سینٹر میں بریفنگ کے دوران ان کا کہنا تھا کہ اس سے فرق پڑتا ہے جب آپ کو انفیکشن لگ جائے۔ مجھے لگتا ہے کہ یہ ناقابل یقین حد تک اہم ہے۔

وہ کہتے ہیں کہ ہمیں منطقی انداز میں بحث کرنا ہو گی۔ کیونکہ بہت سے انفیکشن جن کے بارے میں ہم جانتے ہیں کہ اگر وہ ہمیں لگ جائیں اس عمر میں جب ہم جوان ہوں تو ہم ٹھیک ہو جاتے ہیں مثال کے طور پر چیچک۔ آپ جب چھوٹے ہوتے ہیں تو یہ آپ کو ہوتا ہے اور پھر آپ کو قوت مدافعت مل جاتی ہے۔

اس لیے اگر آپ تصور کریں کہ کوئی ویکسین نہیں ہے تو آئیے اسے ایک طرف رکھ دیں۔ اور یہ کہ یہ ایک وبائی انفیکشن ہے۔ تو پھر ہمیں یہ بات شروع کرنا ہو گی کہ اس انفیکشن کا شکار ہونے کی بہتر عمر کیا ہے۔

اگر آپ ڈیٹا کو دیکھیں تو پتہ چلتا ہے کہ تب جب آپ 45 سال سے کم عمر ہیں۔ جوں جوں آپ کی عمر بڑھے گی یہ آپ کے لیے بدتر ہوگا۔

یہ بھی دیکھیں

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کینسر کے مریضوں کو مفت ادویات کی فراہمی کیلئے فنڈز کے اجراء کی منظوری دے دی

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کینسر کے مریضوں کو مفت ادویات کی فراہمی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے