اتوار 1 جمادی الاول 1443ﻫ - 5 دسمبر 2021

سپریم کورٹ

ریلوے ملازمین کی مستقلی سے متعلق کیس کی سماعت*

سپریم کورٹ نے سیکریٹری ریلوے کا کل طلب کر لیا

یہ ملازمین بیس بیس سال سے ریلوے میں کام کر رہے ہیں. وکیل ملازمین محمد رمضان

کیا یہ سارے کنٹریکٹ ملازمین تهے. جسٹس اعجازلاحسن

نہیں یہ ملازمین ڈیلی ویجز کی طرح تهے لیکن ریگولر پوسٹ کے اگیسنٹ کام کر رہے. وکیل ملازمین

کیا ان لوگوں کی تقرری کے لیے اشتہار دیا گیا تها. چیف جسٹس

نہیں اس کے لیے اشتہار نہیں دیا گیا. وکیل

*ریلوے کا حشر اسی لیے خراب ہے. چیف جسٹس*

ہر چیز کا کوئی طریقہ کار ہوتا ہے. چیف جسٹس

ریلوے کے اندر کوئی طریقہ کار نہیں اس لیے ریلوے کا یہ حال ہے. چیف جسٹس

ہمیں کوئی ایک کاغظ دیکها دیں جس سے پتا چلے یہ ریلوے کے ملازمین ہیں. چیف جسٹس

ان کے سارے ڈاکومنٹ ریلوے کے پاس جمع ہوتے ہیں. وکیل ملازمین

ریلوے ان لوگوں کی وجہ سے چل رہی ہے. وکیل ملازمین

ان ملازمین  کس پراجیکٹ کے لیے تقرری کی گئی تهی. چیف جسٹس

کچه پتا نہیں چل رہا یہ کون تقرریاں کر رہا. چیف جسٹس

اسی لہے ریلوے کا یہ حال ہو گیا ہے. چیف جسٹس

کل پهر ریلوے کے ڈبے پٹری سے اتر گئے. چیف جسٹس

شکر ہے کسی کی جان نہیں گئی لیکن کروڑوں کا نقصان تو ہو گیا. چیف جسٹس

سمجه نہیں آ رہی ریلوے کا کیا بنے گا. چیف جسٹس گلزار احمد

مختلف سیول ڈیپارٹمنٹ کی تجویز پر ان ملازمین کی تقرری کی جاتی ہے. نمائندہ ریلوے

یہ ملازمین ریلوے ٹریک پر گیٹ کیپر ہیں. نمائندہ وکیل

یہ کیا کہہ رہے ہیں آپ اتنی اہم جگہ پر ریلوے آرضی لوگوں کو تعینات کر رہا. چیف جسٹس

آئے روز ریلوے میں حادثات ہو رہے ہیں. چیف جسٹس

ریلوے کیسے  ان لوگوں کی آرضی تقرریاں کر رہا ہے. چیف جسٹس

*ریلوے آفیسران بڑی بڑی  تنخواہیں لے کر بیٹهے ہیں. چیف جسٹس*

*ان ایم پوسٹوں پر  آرضی تقرریاں  ہو رہی. چیف جسٹس*

ایک وقت تها کہ اس کام کے لیے بڑے تجربا کار لوگوں کو رکها جاتا تها. چیف جسٹس

*ریلوے کا حال بالکل ہی پهٹیچر ہے. چیف جسٹس*

نہ وکیل صاحب کو کچه پتا ہے نہ ہی ریلوے حکام کو. چیف جسٹس

عدالت نے سیکرٹری ریلوے کو طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت کل تک ملتوی کر دی.

چیف جسٹس کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی

یہ بھی دیکھیں

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے لگا۔ 

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے