پیر 20 صفر 1443ﻫ - 27 ستمبر 2021

بین الاقوامی عدالت انصاف کے مخصوص عملے پر امریکی پابندیاں عائد

امریکی صدر نے انٹرنیشنل کرمنل کورٹ کے مخصوص عملے کے خلاف پابندیاں لگانے کے صدارتی حکم نامے پر دستخط کر دیئے، عملہ افغانستان میں امریکی فوج کے ممکنہ جنگی جرائم میں ملوث ہونے کی تحقیقات کررہا ہے۔

ٹرمپ انتظامیہ کا دعویٰ ہے کہ دی ہیگ میں قائم ٹربیونل امریکا کی قومی خودمختاری کو سلب کرنے کی کوشش میں ہے اور روس آئی سی سی پر اثرانداز ہو کر اپنا مفاد حاصل کرنا چاہتا ہے۔

وزیرخارجہ مائیک پومپیو آئی سی سی کے مخصوص عملے اور فیملی کے امریکا میں داخلہ کو روک سکیں گے، امریکا کے وزیرخارجہ نے عالمی عدالت انصاف کو کینگرو کورٹ کہہ دیا۔

مائیک پومپیو نے کہا کہ امریکیوں کو دھمکایا جارہا ہے اس لیے وہ بھی خاموش نہیں بیٹھیں گے، کینگرو کورٹ امریکا کو نہیں دھمکا سکتی۔

دوسری جانب انٹرنیشنل کرمنل کورٹ نے امریکی پابندیاں مسترد کرتے ہوئے کہا کہ افغانستان میں امریکی فوج کے لوگوں پر تشدد اور انہیں زیادتی کا نشانہ بنانے کے شواہد جمع کرلیے ہیں۔

عدالت کے ترجمان نے کہا کہ آئی سی سی کے افسر مائیک پومپیو کے بیان کا جائزہ لے رہے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا حکم۔ 

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے