ہفتہ 26 رمضان 1442ﻫ - 8 مئی 2021

بھاگ، ٹڈی دل سے فصلیں مکمل تباہ،سینکڑوں خاندان معاشی بحران کا شکار

بھاگ: بلوچستان ضلع کچھی کی تحصیل بھاگ میں ٹڈی دل نے تباہی مچا دی ہزاروں ایکڑ رقبے پر کاشت کھڑی فصلیں برباد زراعت پر انحصار کرنے والے سینکڑوں خاندان معاشی بدحالی کا شکار ہوگئے صوبائی وزیر تعلیم بلوچستان کی بروقت نشاندہی کے باوجود محکمہ زراعت کی نااہلی اور عدم توجہی سے علاقے میں فضائی اسپرے نہ ہوسکا بھاگ میں کورونا وائرس سے سو گنا زیادہ ٹڈی دل نے معیشت کو تباہ کر دیا۔

زرعی شعبے سے وابستہ سینکڑوں چھوٹے بڑے زمیندار کروڑوں روپے کا زرعی نقصان کر بیٹھے ٹڈی دل کے حملہ آور جتھوں نے باقی ماندہ فصلوں کی تباہی کے دہانے پہنچا دیا محکمہ زراعت بدستور بھاگ سے لاتعلق ہوچکی ہے قبائلی معتبرین اور اہلیان علاقہ میں تشویش اور بے چینی کی لہر دوڑ رہی ہے ٹڈی دل کے ان حملوں کے ابتدائی ادوار میں بلوچستان کابینہ میں شامل صوبائی وزیر تعلیم بلوچستان سردار یار محمد رند نے مکنا گھمبیر کی پیشگی نشادہی کردی تھی۔

تاہم بھاگ میں اس بڑی زرعی تباہی کے باوجود ابتک کوئی فضائی اسپرے نہیں کیا گیا محکمہ زراعت کی دلچسپی کا اندازہ اس بات سے لگائیں کہ بھاگ میں زراعت آفس کھنڈرات میں تبدیل ہوچکا ہے۔

جس کا معائنہ ایم این اے نوابزادہ شازین بگٹی اور نیوز چینل کرچکے ہیں لیکن ابھی تک اس پہ کوئی ایکشن نہیں ہوا اور نہ ہی آفس میں کوئی موجود ہے بھاگ کے مقامی زمیندار اپنی مدد آپکے تحت ٹڈی دل کو ہانک رہے ہیں بھاگ کے مقامی زمینداروں اور کسانوں نے مرکزی اور صوبائی حکومتوں سے ٹڈی دل حملوں میں تباہ ہونے والی تیار فصلوں کی زر تلافی کا مطالبہ کیا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے لگا۔ 

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے