منگل 21 صفر 1443ﻫ - 28 ستمبر 2021

پاکستان میں لاک ڈاؤن نہ کیا گیا تو اموات 20لاکھ سے تجاوز کرسکتی ہیں؟

برطانیہ میں پیش کی گئی ایک تحقیق کے مطابق پاکستان میں 10 اگست کورونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثر کن دن ہوگا،اس ایک دن میں 80 ہزار اموات ہوسکتی ہیں۔

امپیریل کالج لندن برطانوی حکومت کے تعاون سے ایک سٹڈی کی گئی جس کا موضوع تھا کہ دنیا بھر کے ممالک کو لاک ڈاؤن اور بغیر لاک ڈاؤن کورونا وائرس سے کس حد تک نقصان پہنچنے کا امکان ہے۔

پاکستان سے متعلق اس ریسرچ میں کہا گیا ہے کہ اگر پاکستان میں 27 فروری سے 11 جولائی تک 32 فیصد لاک ڈاؤن کیا گیا تو 4 اگست کورونا وائرس کا پیک ڈے ہوگا اور اس دن تک پاکستان میں 1 کروڑ 35 لاکھ 70 ہزار افراد کورونا وائرس کا شکا ر ہوسکتے ہیں۔

اسی ریسرچ کے مطابق پاکستان میں 10 اگست کو کورونا وائرس کی ریکارڈ ہلاکتوں کا امکان ہے، اس دن تقریبا78ہزار 5سو 15افراد کورونا وائرس کے باعث جان کی بازی ہار سکتے ہیں، اس دن کے بعد ہلاکتوں کی تعداد میں روز بروز کمی واقع ہونا شروع ہوجائے گی۔
ریسرچ کے مطابق جنوری 2021 میں پاکستان سے کورونا وائرس کے خاتمے کا امکان ہے، 26 جنوری 2021 تک پاکستان میں اس وباء سے کل ہلاکتیں21لاکھ 32 ہزار617 ہوسکتی ہیں، جبکہ اگر ملک میں لاک ڈاؤن نہ لگایا گیا تو ہلاکتوں کی تعداد 22 لاکھ29 ہزار تک جانے کا بھی امکان ہے۔

اس ریسرچ کے مطابق اگر ابھی پاکستان میں مکمل طور پر لاک ڈاؤن نافذ کردیا جائے تو پاکستان میں ہلاکتوں کو 10 ہزار 200تک محدود کیا جاسکتا ہے۔

اسی ریسرچ میں پڑوسی ملک بھارت کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ بھارت میں 25 جنوری 2021 تک لاک ڈاؤن کے بغیر 1 کروڑ 42 لاکھ سے زائد افراد ہلاک ہوسکتے ہیں، جبکہ جزوی لاک ڈاؤن کے نتیجے میں ہلاکتیں 1 کروڑ36 لاکھ ہونے کا امکان ہے۔

افغانستان میں یہ وبا فروری 2021 تک رہنے کا امکان ہے اور وہاں 3 لاکھ سے زائد ہلاکتوں کا امکان ہے۔
واضح رہے کہ یہ تمام اعداد و شمار اندازوں پر مبنی ہیں ، یہ پیش گوئی یا حتمی نہیں ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

وزارتِ مذہبی امور نے کرونا وبا ء کےسلوگن کے حوالے سے نوٹیفکیشن جاری کردیا۔  حکام مذہبی امور

وزارتِ مذہبی امور نے کرونا وبا ء کےسلوگن کے حوالے سے نوٹیفکیشن جاری کردیا۔  حکام …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے