بدھ 25 ذوالحجہ 1442ﻫ - 4 اگست 2021

امریکا کے برعکس برطانیہ اور فرانس کا عالمی عدالت انصاف کی بھرپور حمایت کا اعلان

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے عالمی عدالت انصاف کے اہلکاروں پر پابندیاں لگائے جانے کے برعکس برطانیہ اور فرانس نے آئی سی جے کی بھرپور حمایت کا اعلان کیا ہے۔

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے چند روز قبل ایگزیکٹو آرڈر جاری کیا تھا جس کے تحت عالمی عدالت انصاف کے بعض اہلکاروں پر اقتصادی اور سفری پابندیاں عائد کرنے کی منظوری دی گئی تھی۔

یہ پابندیاں آئی سی جے کے ایسے اہلکاروں پر لگائی جا رہی ہیں جو افغانستان میں مبینہ نسل کشی کے واقعات میں امریکی فوجیوں کے ملوث ہونے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔

امریکا کے اتحادی برطانیہ نے واضح کیا ہے کہ عالمی عدالت انصاف کو آزادانہ اور پابندیوں کے خوف کے بغیر مجرموں کے بارے میں تحقیقات جاری رکھنی چاہئیں۔

برطانیہ کے وزیرخارجہ ڈومینک راب کا کہنا ہے کہ برطانیہ آئی سی سی کی اصلاحات کی حمایت جاری رکھے گا لہذا عالمی عدالت انصاف عالمی سطح پر مجرمانہ سرگرمیوں میں ملوث عناصر کے خلاف تحقیقات جاری رکھے۔

فرانس کے وزیر خارجہ نے صدر ٹرمپ کی جانب سے پابندیوں کے اعلان کو عدالت پر حملہ قرار دیا اور مطالبہ کیا کہ عالمی عدالت انصاف کے اہلکاروں پر عائد پابندیاں فوری طورپر واپس لی جائیں۔

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا حکم۔ 

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے