منگل 24 ذوالحجہ 1442ﻫ - 3 اگست 2021

ارباب ہاوس گزگی خضدار میں قبائلی راجی جرگہ کا انعقاد

جرگہ میں خضدار کے قبائلی معتبرین و زمینداران کے کثیر تعداد میں شرکت

خضدار – ارباب ہاوس خضدار میں آج ایک قبائلی راجی جرگہ زیر صدارت ارباب جھالاوان ارباب محمد نواز گزگی مینگل منعقد ہوا
جس میں خضدار کے تمام اقوام کے قبائلی معتبرین رئیس، ٹکری سمیت زمینداروں نے کثیر تعداد میں شرکت کیے
جرگہ میں خضدار کے علاقائی مسائل و زمینی تنازعات پر سیر حاصل بحث کی گئی
جرگہ سے خضدار کے قبائلی معتبرین و زمیندار رہنماوں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خضدار کے قبائلی اراضیات پر سرکاری قبضہ غیر قانونی ہے جسے خضدار کے قبائل مسترد کرتے ہیں
مقررین کا کہنا تھا کہ جن اراضیات کو سرکاری ملکیت قرار دی جارہی ہے ان پر پاکستان کے ساتھ الحاق سے قبل یہاں کے قبائل کا قبضہ تھا اور خان آف قلات کے دور میں بھی ان اراضیات کو خضدار کے قبائل کی ملکیت تسلیم کی گئی تھی خان آف قلات کے دور حکومت کے اسناد بطور ثبوت آج بھی قبائل کے پاس موجود ہیں
مقررین نے 1972 تا 1981 کے سیٹلمنٹ کو بحال کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ اگر یہ اراضیات قبائل کی ملکیت نہیں تھے تو اس سے قبل سرکار خضدار چھاونی، ائیر پورٹ، سینٹرل جیل، یونیورسٹی سمیت دیگر کئی اراضیات معاوضہ یہاں کے قبائل کو کس کھاتے میں دیے
جرگہ میں خضدار کے قبائل کی اراضیات پر سرکاری قبضہ کیخلاف ارباب جھالاوان ارباب نواز مینگل کی سربراہی میں دس رکنی کمیٹی تشکیل دینے کا فیصلہ کیا
کمیٹی کے دیگر ارکان میں
سردار طیب زنگیجو، رئیس علی احمد بلوچ، رئیس ڈاکٹر قدوس، آغا سلطان ابرہیم، صابر قلندرانی، جاوید سوز، ٹکری یوسف کرد، ماسٹر محمد عالم کرد، خالد محمود ایڈوکیٹ، عبدالقادر گزگی شامل ہیں
کمیٹی بہت جلد اپنے اگلے لائحہ عمل سے عوام کو بزریعہ پریس آگاہ کریگی

یہ بھی دیکھیں

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے لگا۔ 

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے