ہفتہ 26 رمضان 1442ﻫ - 8 مئی 2021

امریکی اخبار نے اسلام مخالف اشتہار کی اشاعت روک دی: مسلم کمیونٹی سے غیر مشروط معذرت

نیشویل/ٹینیسی(رپورٹ:ایم آر فرخ)امریکی ریاست ٹینسی کے اخبار نے اسلام مخالف اشتہار کی اشاعت پر معافی مانگ لی ہے اور اس بات کی تحقیقات شروع کردی ہیں کہ متنازعہ اشتہار کیونکر دیا گیا تھا.” The Tennessean”کے اتوار ( 21 جون) کی اشاعت میں ایک مذہبی گروپ کی طرف سے پورے صفحہ کا اشتہار کیا گیا ہے جس میں نیشویل کے شہریوں کو مخاطب کرتے ہوئے خبردار کیا گیا ہے کہ اگلے ماہ 18 جولائی کو اسلام پسندوں کی جانب سے اسلام کے غیر مخصوص مفادات کے لئے نیشویل پر بم دھماکے کا امکان ہے.فیوچر آف امریکہ” کی جانب سے شائع اشتہار میں یہ بھی دعوی کیا گیا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ امریکہ کے آخری صدر ہونگے.اشتہار میں صدر ٹرمپ اور پاپ فرانسز کی تصاویر بھی شائع کی گئیں.اشتہار اس دعوی کے ساتھ شروع ہوتا ہے کہ نیشویل میں نیوکلیائی ڈیوائس سے حملہ کیا جاسکتا ہے.چند روز قبل اسی گروپ نے مذکورہ اخبار میں فل پیج کا ہی ایڈ شائع کیا تھا جس میں اس بات کا اشارہ دیا گیا تھا کہ گروپ نیشویل کے شہریوں کو ممکنہ حملے کے بارے میں خبردار کرنے کا ارادہ رکھتا ہے.تاکہ وہ خبردار رہیں.” دی ٹینیسین” نے اپنی ویب سائیٹ پر معذرت پوسٹ کرتے ہوئے لکھا ہے کہ اشتہار کی وجہ سے اخبار کے طویل عرصہ سے قائم اس معیار کو دھچکہ لگا ہے جو اس نے نفرت انگیز جذبات کے اظہار پر پابندی کے سلسلے میں قائم کر رکھا ہے.اخبار کے وائس پریذیڈنٹ اور ایڈیٹر مائیکل اے انیستاسی نے کہا کہ اخبار کا سیلز اور ایڈورٹائزنگ کا شعبہ آزادانہ کام کرتا ہے.تاہم اس اشتہار کی وجہ سے اخبار کی ساکھ بےحد متاثر ہوئی ہے.آیندہ سے اشتہارات کے مواد کا احتیاط سے جائزہ لینے کی ضرورت ہے.انہوں نے کہا کہ اشتہار بہت خطرناک ہے اس کا کسی طور پر بھی دفاع نہیں کیا جاسکتا.اسے کسی بھی صورت میں شائع نہیں ہونا چائیے تھا.اسکی وجہ سے ھمارے کمیونٹی ممبران، ھمارے اخبار کے ملازمین کی دل آزاری ہوئی ہے میں.خود بھی اشتہار کی اشاعت سے بہت شرمندہ ہوں.نیوز پیپر کے مطابق سیلز ڈیپارٹمنٹ کو حکم دیا گیا ہے کہ مستقبل میں اشتہار کی اشاعت مکمل روک دی جائے.کونسل آن امریکن اسلامک ریلیشنز( CAIR) نامی ایک اسلامک ایڈووکیسی تنظیم نے اخبار کی جانب سے معذرت اور اشتہار نکالنے کے اقدام کا خیر مقدم کیا ہے. ترجمان ابراھام ھُوپر نے کہا ہے کہ دی ٹینسین کو چاہیئے کہ اظہار رائے کے حوالے سے اپنی پالیسی ازسر نو ترتیب دے اور اپنے سٹاف کی ٹریننگ کا اہتمام کرے تاکہ حساس معاملات پر ذمہ داری کا مظاہرہ کیا جائے. CAIR نے اخبار کو پیشکش کی ہے کہ ہم سٹاف کی ٹریننگ کا بندوبست کرسکتے ہیں.

یہ بھی دیکھیں

فلسطین: امریکی کانگریس میں فلسطینی بچوں کی گرفتاریوں کی مذمت۔ 

فلسطین: امریکی کانگریس میں فلسطینی بچوں کی گرفتاریوں کی مذمت۔ بٹی میک کولم نے اسرائیلی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے