جمعرات 16 صفر 1443ﻫ - 23 ستمبر 2021

سعودی حکومت کا محدود پیمانے پر حج ادائیگی کی اجازت دینے کا فیصلہ

رواں سال صرف مملکت میں مقیم مختلف ممالک سے تعلق رکھنے والے افراد ہی حج کریں گے، سعودی گیزٹ
مکہ مکرمہ (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔22 جون 2020ء) سعودی عرب نے محدود تعداد میں عازمین کو حج کی ادائیگی کی اجازت دینے کا فیصلہ کرلیا۔ سعودی گیزٹ کی رپورٹ کے مطابق رواں سال سعودی عرب میں مقیم مختلف ممالک سے تعلق رکھنے والے افراد حج کرسکیں گے۔ رواں سال کورونا وبا کی وجہ سے دنیا بھر سے عازمینِ حج کو ہدایت کی گئی تھی کہ وہ حج کی تیاری کو فی الحال موخر کردیں کیونکہ حجکروانے یا نہ کروانے کے حوالے سے فیصلہ کیا جانا تھا۔
اب سعودی عرب کی جانب سے فیصلہ کر لیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ رواں سال مملکت میں مقیم مختلف ممالک کے لوگ حج کر سکیں گے۔
واضح رہے کہ سعودی عرب میں کورونا کے مجموعی کیسز کی تعداد 1لاکھ 61ہزار5 ہوگئی ہےجبکہ کورونا سے اب تک ہونے والی اموات کی کل گنتی 1307تک پہنچ چکی ہے۔
مملکت میں 1لاکھ 5ہزار175 مریض صحتیاب بھی ہوچکے ہیں لیکن نئے کیسز کے آنے کا سلسلہ بھی جاری ہے۔ ان حالات میں معمول کے مطابق حج کروانا بہت مشکل ہوگیا ہے کیونکہ لاکھوں لوگوں کے دنیا بھر سے آنے کی صورت میں وبا پر قابو پانا ناممکن ہوجائے گا۔
اسی لیے سعودی حکومت حج کی ادائیگی کے حوالے سے غور کر رہی تھی اور اب فیصلہ کرلیا گیا ہے کہ دوسرے مملک سے عازمین حج کیلئے نہیں آئیں گے اور ملک میں مقیم افراد حج کر سکیں گے۔ رواں سال محدود تعداد میں عازمین حجکریں گے۔ دنیا بھر سے عازمین حج ادا نہیں آسکیں گے لیکن یہ بات لاکھوں مسلمانوں کیلئے سکون کا باعث ہے کہ تمام تر حالات کے باجود حج کو منسوخ نہیں کیا گیا اور محدود لوگوں کے ساتھ ہی صحیح لیکن حج لازمی ادا ہوگا۔

یہ بھی دیکھیں

وزیراعلیٰ سندھ سیدمراد علی شاہ کا کورونا وائرس کی صورتحال سے متعلق بیان۔ 

وزیراعلیٰ سندھ سیدمراد علی شاہ کا کورونا وائرس کی صورتحال سے متعلق بیان۔ گزشتہ 24 …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے