منگل 29 رمضان 1442ﻫ - 11 مئی 2021

بھارت نے چین کے ساتھ سرحدی تنازعہ جاری رکھا تو اسے 1962 کی جنگ سے بھی زیادہ ہزیمت اٹھانا پڑے گی ، چینی اسٹریٹیجک ماہرین کا انتباہ

مقبوضہ جموں و کشمیر میں لداخ سرحد پر چینی اور بھارتی فوجوں کے درمیان جاری تنازعہ کے دوران ، چینی اسٹریٹیجک ماہرین نے بھارت کو خبردار کیا ہے کہ وہ چین کے ساتھ سرحدی کشیدگی بڑھانے سے باز رہے جیسا کہ اس نے پاکستان اور دیگر ہمسایہ ممالک کے ساتھ کیا ہواہے۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق چین کی کمیونسٹ پارٹی کے ترجمان روزنامے گلوبل ٹائمز نے بعض ماہرین کے حوالے سے ، بھارت کو چین کے خلاف کسی بھی مہم جوئی سے باز رہنے کے بارے میں متنبہ کیا کیونکہ اس کے تباہ کن نتائج نکل سکتے ہیں۔تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ اگر بھارت نے ملک میں چین مخالف جذبات کو نہیں روکا اور اپنے سب سے بڑے ہمسائے کے ساتھ فوجی تنازعہ جاری رکھا تو اسے چین کے ساتھ 1962 کے سرحدی تنازعے کے بعد زیادہ ہزیمت کا سامنا کرنا پڑے گا۔اخبار نے شنگھائی میں فوڈن یونیورسٹی کے سنٹر فار ساؤتھ ایشین اسٹڈیز کے پروفیسر لن منانگ حوالے سے کہا ہے کہ بھارت میں انتہا پسندی کی حد تک قوم پرستی ایک معمول کی بات ہے لیکن یہ ہمارے لئے فکر کی بات نہیں ہے جب چین کو مزیداشتعال دلانے کیلئے قوم پرستی پالیسی سازی پر حاوی آجائے ۔ انہوںنے کہاکہ جب بھارت پاکستان اور دوسرے ہمسایہ ممالک کے ساتھ تنازعات جاری رکھے ہوئے ہے تو ، قوم پرستی اصل اقدامات کیلئے بھارت کو مجبور کر سکتی ہے تاہم جب چین کی بات آتی ہے تو یہ مشکل بات ہے ۔ بیجنگ میں مقیم عسکری ماہر وی ڈونگکس نے گلوبل ٹائمز کو بتایا کہ مودی کا اپنے عوام کو اطمینان دلانے اورفوج کا مورال بلند کرنے کیلئے یہ دعویٰ کہ بھارتی فوج تمام ضروری اقدامات کر سکتی ہیں لفظوں سے کھیلنے کے مترادف ہے تاکہ کشیدگی میں اضافے سے بچا جاسکے ۔ کیوں کہ وہ واقعتاً نہیں چاہتے کہ چین کے سا تھ ایک اور تصادم شروع کرنے کیلئے فوج کو ترغیب دی جائے۔انہوںنے کہا کہ چین کی صلاحیت نہ صرف فوجی لحاظ سے بلکہ مجموعی اور بین الاقوامی اثر و رسوخ میں بھی ہندوستان سے زیادہ ہے۔وہ دونوں ملکوں کے درمیان لداخ کی وادی گلوان میں 15 جون کو ہونے والی جھڑپوں کے حوالے سے گفتگو کر رہے تھے ، جس میں چینی فوج کے ہاتھوں کم از کم 20 بھارتی فوجی ہلاک اور 70 سے زیادہ زخمی ہوگئے تھے۔

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا حکم۔ 

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے