ہفتہ 22 ربیع الثانی 1443ﻫ - 27 نومبر 2021

میر شکیل الرحمان کے خلاف پراپرٹی کیس میں ضمانت کی درخواست پر سماعت 7 جولائی تک ملتوی

لاہور: ہائیکورٹ نے جنگ اور جیو کے ایڈیٹر انچیف میر شکیل الرحمان کے خلاف پراپرٹی کیس میں ضمانت کی درخواست پر سماعت 7 جولائی تک ملتوی کردی۔

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شہباز رضوی اور جسٹس محمد سردار احمد نعیم پر مشتمل 2رکنی بینچ نے میر شکیل الرحمان کے34سال پرانے اراضی کے معاملے میں درخواست ضمانت پر سماعت کی۔

دوران سماعت عدالت نے نیب کے وکیل سے استفسار کیا کہ کیا نیب نے جواب جمع کرا دیا ہے ؟ اس پر نیب کے وکیل سید فیصل رضا بخاری نےبتایا کہ مکمل جواب جمع کرا دیا ہے۔

بینچ کے سربراہ جسٹس شہباز رضوی نے کہا کہ میرے فیلو جج جسٹس محمد سردار احمد نعیم کی فائل میں نیب کے جواب کی کاپی موجود نہیں، نیب ہائیکورٹ آفس میں فائل کے ساتھ جواب لگا کر جمع کرائے اس کے بعد کیس سنیں گے۔

اس پر نیب کے پراسیکیوٹر فیصل رضابخاری نے بتایا کہ انہوں نے 4 کاپیاں جمع کرائی تھیں، اگر 4کاپیاں نہ ہوں تو ہائیکورٹ آفس جواب جمع نہیں کرتا۔

دورانِ سماعت عدالت نے استفسار کیا کہ کیا میرشکیل الرحمان جسمانی ریمانڈ پر ہیں؟ جس پر میر شکیل الرحمان کے وکیل امجد پرویز نے بتایاکہ نہیں، انہیں جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوایا جا چکا ہے، نیب کے جواب کے مطابق میر شکیل الرحمان سے انوسٹی گیشن مکمل ہو چکی ہے۔

عدالت نے سوال کیا کہ7 اپریل کے بعد میر شکیل الرحمان کے خلاف کیا مواد ریکارڈ پر آیا؟ وکیل نے بتایاکہ بشیر احمد ڈائریکٹر لینڈ ڈویلپمنٹ اور ڈی جی ایل ڈی اے ہمایوں فیض رسول کے بیانات نیب حکام نے قلمبند کیے، نیب نے 1986 کے ایل ڈی اے کے دو افسروں کے بیانات بھی قلمبند کیے

یہ بھی دیکھیں

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے لگا۔ 

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے