پیر 30 شعبان 1442ﻫ - 12 اپریل 2021

عالمی ادارہ صحت نے ایسے ثبوت سامنے آنے کا اعتراف کیا ہے کہ کورونا وائرس ہوا میں تیرتے ننھے ذرات کے ذریعے پھیل سکتا ہے۔

عالمی ادارہ صحت نے ایسے ثبوت سامنے آنے کا اعتراف کیا ہے کہ کورونا وائرس ہوا میں تیرتے ننھے ذرات کے ذریعے پھیل سکتا ہے۔

ایک عہدیدار کے مطابق پرہجوم، بند یا گھٹن زدہ مقامات پر ہوا کے ذریعے وائرس کی منتقلی کو خارج از امکان نہیں قرار دیا جا سکتا۔

اگر ان ثبوتوں کی تصدیق ہوجائے تو اس سے بند کمروں میں کورونا سے بچنے کے لیے دی گئی ہدایات کو تبدیل کیا جا سکتا ہے۔

اس سے قبل 200 سے زیادہ سائنسدانوں نے عالمی ادارہ صحت پر الزام عائد کیا تھا کہ وہ وائرس کی ہوا کے ذریعے منتقلی کے خطرے کو کم کر کے پیش کر رہا ہے۔

عالمی ادارہ صحت نے اب تک یہ کہا ہے کہ وائرس لوگوں کے کھانسنے اور چھینکنے سے نکلنے والے قطروں کے ذریعے پھیلتا ہے۔

اس خط پر دستخط کرنے والے افراد میں سے ایک یونیورسٹی آف کولوراڈو کے ماہرِ کیمیا ہوزے جیمینیز نے خبر رساں ادارے روئٹرز کو بتایا کہ ’ہم چاہتے ہیں کہ وہ ثبوتوں کو قبول کریں۔ یہ عالمی ادارہ صحت پر حملہ نہیں ہے بلکہ ایک سائسنسی بحث ہے۔ تاہم ہمیں یہ بات عوامی سطح پر اس لیے کرنی پڑی کیونکہ ہمیں لگتا ہے کہ ان سے کئی مرتبہ بات چیت کے بعد بھی وہ ثبوتوں کو سننے کے لیے تیار نہیں تھے۔‘

عالمی ادارہ صحت نے کہا ہے کہ یہ ثبوت ابھی ابتدائی ہیں اور ان پر مزید جائزے کی ضرورت ہے۔

امراض کی منتقلی روکنے اور ان پر قابو پانے کے ذمہ دار شعبے کی عہدیدار بینیڈیٹا ایلیگرانزی نے کہا کہ کورونا وائرس کی ’پر ہجوم، بند، اور گھٹن زدہ مقامات پر‘ ہوا کے ذریعے منتقلی کو خارج از امکان نہیں قرار دیا جا سکتا۔

یہ بھی دیکھیں

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کینسر کے مریضوں کو مفت ادویات کی فراہمی کیلئے فنڈز کے اجراء کی منظوری دے دی

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کینسر کے مریضوں کو مفت ادویات کی فراہمی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے