اتوار 3 ذوالقعدہ 1442ﻫ - 13 جون 2021

حکومتِ سندھ نے بجٹ میں سوشل پروٹیکشن کے لئے 34 ارب روپے رکھے ہیں۔ چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ

رقم زراعت، لائیو اسٹاک، سمال انڈسٹریز، آسان قرضوں، انفارمیشن ٹیکنالوجی اسارٹ اپس اور کیش ٹرانسفر کی صورت میں عوام تک پہنچائی جائے گی۔ چیف سیکریٹری سندھ

کراچی (8 جولائی 2020) چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ کی زیر صدارت معاشرتی تحفظ اور معاشی استحکام کے اقدامات پر عمل درآمد کی نگرانی کے لئے قائم اسٹیئرنگ کمیٹی کا اجلاس سندھ سیکریٹریٹ میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں وزیر اعلیٰ سندھ کے اسپیشل اسسٹنٹ حارث گازدار، سیکریٹری خزانہ سید حسن نقوی، سیکریٹری زراعت عبدالرحیم سومرو، سیکریٹری انویسٹمنٹ سید نجم شاہ، سیکریٹری سوشل ویلفیئر ڈپارٹمنٹ، سیکریٹری لائیو اسٹاک اور سیکریٹری انڈسٹریز نے شرکت کی۔
اجلاس میں کرونا وائرس کی وجہ سے متاثر شعبوں اور افراد کی بحالی کے متعلق تجاویز پیش کی گئی۔ اجلاس میں چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ نے کہا کہ صوبائی حکومت نے بجٹ میں سوشل پروٹیکشن پر توجہ دی ہے اور حکومتِ سندھ نے بجٹ میں سوشل پروٹیکشن کے لئے 34 ارب روپے رکھے ہیں یہ رقم زراعت، لائیو اسٹاک، سمال انڈسٹریز، آسان قرضوں، انفارمیشن ٹیکنالوجی اسارٹ اپس اور کیش ٹرانسفر کی صورت میں عوام تک پہنچائی جائے گی۔ ممتاز علی شاہ نے کہا کہ بجٹ 2020-21 میں زراعت کے لئے 3 ارب روپے رکھے گئے ہیں جس میں 25 ایکڑ زمین کے مالک آبادگاروں کو چاول پیداوار کے معیار کو بہتر کرنے کے لئے 1 ارب، فرٹیلائزرز کی مد میں سبسڈی کے لئے 1 ارب اور پیسٹیسائیڈز کے لئے بھی ایک 1 ارب روپے رکھے ہیں۔ چیف سیکریٹری سندھ نے سیکریٹری زراعت کو ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ سبسڈی کے لئے 15 روز کے اندر طریقے کار جوڑنے لئے 19 گریڈ کے آفسر کو فوکل پرسن مقرر کیا جائے اور 15 روز بعد اجلاس میں مکینزم ٹائیم لائین کے ساتھ پیش کیا جائے۔
انہونے کہا کہ چھوٹے کاروباروں کی بحالی کے لئے آسان قرضے فراہم کرنے کے لئے 5 ارب روپے رکھے گئے ہیں جو سندھ بینک کے زریعے آسان شرائط پر دئے جائیں گے چیف سیکریٹری سندھ نے مزید کہا کہ انفارمیشن ٹیکنالوجی سے متعلق اسٹار اپس کے لئے بھی 1200 ملین روپے رکھے گئے ہیں انہونے سیکریٹری انویسٹمنٹ کو ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ صوبے سندھ کے پرائیویٹ شعبے کے ساتھ مل کر اسٹارٹ اپ پر بہت زیادہ کام کیا جا سکتا ہے، انہونے سیکریٹری انویسٹمنٹ کو کہا کہ وہ آئی ٹی جامعات کے ساتھ مل کر اس پر کام کریں۔ ممتاز علی شاہ نے کہا کہ حکومت سندھ نے کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کے لئے بھی 20 ارب روپے کیش ٹرانسفر کے لئے رکھے گئے ہیں جو آن لائین بینکنگ کے زریعہ لوگوں تک پہنچائے جائیں گے جس کے لئے نادرا سمیت تمام متعلقہ اداروں سے ڈیٹا لیا جائے گا۔ اسپیشل اسسٹنٹ حارث گازدار نے کہا کے کرونا وائرس سے متاثرہ افراد اور کاروبار کا ڈیٹا جمع کیا جارہا ہے جس کے لئے نادرا، بی آئی ایس پی، مردم شماری اور پولیو ورکر کے رجسٹر سے ڈیٹا لیا جائے گا۔

یہ بھی دیکھیں

وزارتِ مذہبی امور نے کرونا وبا ء کےسلوگن کے حوالے سے نوٹیفکیشن جاری کردیا۔  حکام مذہبی امور

وزارتِ مذہبی امور نے کرونا وبا ء کےسلوگن کے حوالے سے نوٹیفکیشن جاری کردیا۔  حکام …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے