ہفتہ 22 ربیع الثانی 1443ﻫ - 27 نومبر 2021

اقوام متحدہ نے کشمیر کے بارے میں بھارت کو بھیجا جانے والا اپنا تیسرا مراسلہ مشتہر کردیا

اقوام متحدہ کے خصوصی مندوبین نے گزشتہ برس پانچ اگست سے بھارت کو بھیجے جانے والے اپنے تیسرے مراسلے کو مشتہر کر دیا ہے جب نریندر مودی کی زیرقیادت فسطائی حکومت نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت منسوخ کرکے اسکافوجی محاصرے کر لیا تھا۔کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق اقوام متحدہ نے اپنے مراسلے میں بھارتی فوجیوں اور پولیس اہلکاروں کی طرف سے ضرورت سے زیادہ طاقت کے استعمال اور گرفتاری اور نظربندی کے دوران کشمیریوں کے ساتھ ناروا سلوک پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے۔مراسلے میں نریندر مودی حکومت کو لکھا گیا ہم آپ کی حکومت کی توجہ ان معلومات کی طرف دلانا چاہتے ہیں ہیں جو ہمیں 5 اگست 2019 کے بعد عائد سخت پابندیوں کے بعد جموں و کشمیر میں انسانی حقوق کی صورتحال کی مسلسل خرابی کے بارے میں موصول ہوئی ہیں۔ مراصلے میں بلاجواز نظربندیوں ،تشدد کی ممانعت کی خلاف ورزیوں اور اقلیتوں سے وابستہ افراد کے حقوق کی خلاف ورزیوں کا خاص طور پر حوالہ دیا گیا ہے۔ تشدد، غیر انسانی سلوک، ماورائے عدالت سزاﺅں ، پھانسیوں اور اقلیتوں سے وابستہ افراد کے حقوق کی خلاف ورزیوں سے متعلق اقوام متحدہ کے چار خصوصی مندوبین نے رواں برس چار مئی کو اپنا تیسرا مشترکہ مراسلہ بھارت بھیجا تھا جسے ساٹھ روز کی جوابی مدت گزرجانے کے بعداب حال ہی میں عوام کیلئے مشتہر کیا گیا ہے۔اقوام متحدہ کے خصوصی مندوبین نے پہلا مراسلہ گزشتہ برس سولہ اگست جبکہ دوسرا رواں برس 27فروری کو بھارت بھیجا تھا جنکا بھی بھارت نے تاحال کوئی جواب نہیں دیا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا حکم۔ 

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے