منگل 6 شوال 1442ﻫ - 18 مئی 2021

چین سب سے بڑا خطرہ ہے، امریکی انٹیلیجنس کی رپورٹس سے امریکہ کی پریشانی بڑھنے لگی

واشنگٹن :چین سب سے بڑا خطرہ ہے، امریکی انٹیلیجنس کی رپورٹس سے امریکہ کی پریشانی بڑھنے لگی،اطلاعات کے مطابق ایف بی آئی کے سربراہ نے کہا ہے کہ چین دنیا کا اکیلا سپر پاؤر بننے کے لیے کچھ بھی کر گذرنے کے لیے تیار ہے اور وہ بیرون ملک مقیم اپنے باشندوں کی زبردستی وطن واپسی کے لیے بھی ہر طرح کے ہتھکنڈے استعمال کر رہا ہے۔

ایف بی آئی کے سربراہ کرسٹوفر رے واشنگٹن کے ہڈسن انسٹیٹیوٹ میں ایک سیمینار سے خطاب میں کر رہے تھے۔ ایک گھنٹے کی اپنی تقریر میں انہوں نے کہا کہ چین کی طرف سے امریکی معیشت، ٹیکنالوجی اور سیاست میں مداخلت امریکا کے لیے سب سے بڑا خطرہ بن کر اُبھر رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ان دنوں امریکی وفاقی تحقیقاتی ادارہ تقریبا ہر دس گھنٹے میں چین کی طرف سے ایک نئے انٹیلیجنس حملے سے نبرد آزما ہونے میں لگا ہوا ہے۔ انہوں نے کہا،”اس وقت ہم ملک بھر سے کاؤنٹر انٹیلیجنس کے جن تقریبا پانچ ہزار کیسز سے نمٹ رہے ہیں، ان میں سے آدھے کیسز کا تعلق چین سے ہے۔”

انہوں نے کہا کہ چین کا انٹیلیجنس آپریشن لگاتار امریکی حکومت، اس کی پالیسیوں اور موقف کو ٹارگٹ کر رہا ہے، جس کا اثر صدارتی الیکشن پر بھی پڑ سکتا ہے۔

ایف بی آئی کے ڈائریکٹر نے کہا کہ چین کی حکومت ایک حکمت عملی کے تحت بیرون ملک مقیم اپنے باشندوں کو بھی نشانہ بنا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس پالیسی کے تحت چین سے تعلق رکھنے والے ایسے شہریوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے جو اپنے ملک میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر آواز اٹھاتے ہیں۔

کرسٹوفر رے نے الزام لگایا کے چینی حکومت کے ‘فوکس ہنٹ’ نامی اس پروگرام کی نگرانی خود صدر شی جِن پِنگ کرتے ہیں۔
چین کی حکومت اس پروگرام کے وجود سے انکار نہیں کرتی تاہم اس کا کہنا ہے کہ اس کا نشانہ کرپشن میں ملوث افراد ہیں جو ملک سے غبن کرکے پیسہ باہر لے جاتے ہیں۔

لیکن امریکی حکام کے مطابق اس پروگرام کی آڑ میں دراصل بیرون ملک مقیم چینی باشندوں کو دھمکیاں دی جاتی ہیں اور انہیں وطن واپس آنے پر مجبور کیا جاتا ہے۔ بقول ان کے اس کام کے لیے سکیورٹی ادارے ان افراد کے چین میں مقیم رشتے داروں کو ہراساں کرتے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ ایسی بھی مثال سامنے آئی ہے کہ "جب چین میں حکام ‘فوکس ہنٹ’ پروگرام کے تحت ایک شخص کو نہیں ڈھونڈ پائے تو انہوں نے امریکا میں مقیم اس کی فیملی کو پیغام دلا بھیجا کا اُس سے کہیں کہ اُس کے پاس دو ہی راستے ہیں: فوری طور پر چین واپسی آئے یا پھر خود کشی کر لے۔”

اس موقع پر ایف بی آئی کے ڈائریکٹر نے امریکا میں مقیم چینی باشندوں سے کہا کہ اگر ان پر چین کی طرف سے وطن واپسی کے لیے دباؤ آئے تو وہ مدد کے لیے ایف بی آئی سے رابطہ کر سکتے ہیں۔

امریکی ایف بی آئی کے ڈائریکٹر کی طرف سے یہ الزامات ایک ایسے وقت سامنے آئے ہیں جب ڈونلڈ ٹرمپ کی صدارتی مہم میں چین کے ساتھ کشیدگی ایک بڑا موضوع ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکا کو چین سے درپیش خطرات کے موضوع پر آنے والے ہفتوں میں امریکی وزیر قانون اور وزیر خارجہ مزید روشنی ڈالیں گے۔

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا حکم۔ 

سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوّث داعش کے پانچ مشتبہ ارکان کو سزائے موت کا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے