ہفتہ 5 رمضان 1442ﻫ - 17 اپریل 2021

مقبوضہ کشمیر : سید علی گیلانی کی 5 اگست کو مکمل ہڑتال کی اپیل

مقبوضہ کشمیر میں بزرگ حریت رہنما سید علی گیلانی نے 5اگست کو مکمل ہڑتال کی کال دیتے ہوئے لوگوں سے اس دن کو یوم آگہی کے طورپر منانے کی اپیل کی ہے۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق سید علی گیلانی نے 5اگست کے حوالے سے کشمیری عوام کے نام ایک پیغام میں کہاکہ یہ دن برصغیر کی تاریخ کا سیاہ ترین دن ہے۔ انہوں نے کہا کہ فاشسٹ بھارتی حکومت نے جس بے شرمی ، دریدہ ذہنی اور ڈھٹائی کے ساتھ نہ صر ف عالمی قوانین کی دھجیاں بکھیریں بلکہ اپنے ہی آئین کا بے رحمی سے قتل کرتے ہوئے مقبوضہ جموں و کشمیر کو دو لخت کرکے اسے غیر آئینی ، غیر قانونی اور غیر اخلاقی طریقے سے بھارت میں ضم کردیا۔ انہوںنے کہاکہ اس سے بھارت کے چہرے سے مکروفریب بے نقاب ہوگیا اوراس کی اصلیت دنیا کے سامنے برہنہ ہوگئی۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی حکمرانوں نے اپنے مذموم ایجنڈے کی تکمیل کے لئے پوری آبادی کو اپنے گھروں میں قید کرکے اور علاقے کو دنیا کی سب سے بڑی جیل میں تبدیل کرکے عالمی برادری کے سامنے کھلا چیلنج کھڑا کیا ہے۔ تاہم دنیا نے جو مجرمانہ خاموشی اختیار کی ہے وہ کسی انسانی المیے سے کم نہیں ہے۔بزرگ رہنما نے کہا گزشتہ سال 5 اگست کو کھلی جاحیت کے بعد بھارت علاقے میں آبادی کا تناسب تبدیل کرکے جموں و کشمیر کے مسلم اکثریتی کردار اور زمینی حقائق کو مسخ کرنے کے لئے جبر ، تشدد اور دھوکہ دہی کی پالیسی پر عمل پیرا ہے۔انہوںنے کہاکہ ایک ایسے وقت میں جب پوری دنیا کورونا وائرس کی وبا کا مقابلہ کرنے میں مصروف ہے اور لوگوں کی زندگیاں بچانے اور معیشت کی بحالی کے لئے تمام وسائل بروئے کار لائے جارہے ہیں ہے ، فاشسٹ بھارتی حکومت نے کورونا وائرس کے لاک ڈاؤن کی آڑ میں اپنے مذموم ایجنڈے کو پورا کرنے کے لئے کوششیں تیز کردی ہیں۔سید علی گیلانی نے کہا کہ ایک طرف لوگوں کو اپنے گھروں تک محدود کردیا گیا ہے اور نئے قوانین نافذ کیے جارہے ہیں جبکہ دوسری طرف بیرونی لوگوں کو ایک کے بعد دوسرے بہانے سے شہریت کے حقوق دیئے جارہے ہیں اور علاقے میں آباد کیا جارہا ہے۔انہوں نے کہا اسی طرح زمین کے بڑے بڑے رقبے قبضے میں لے کر بھارتی فوج کے حوالے کئے جارہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اسرائیلی طرز پر کشمیری عوام کو ان کی زمین اور جائیدادوں سے زبردستی بے دخل کیا جارہا ہے اور انہیں اپنے ہی گھروں میں پناگزین بنانے کی کوشش کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ انتہائی سنگین صورتحال ہے لیکن افسوس ہے کہ نہ تو مقامی آبادی ہوشیار اور بیدار دکھائی دیتی ہے اور نہ ہی بیرونی دنیا اس صورتحال سے بخوبی آگاہ نظر آتی ہے۔
بزرگ حریت رہنما نے کہاکہ ضرورت اس بات کی ہے کہ ہم 5 اگست کو صرف ایک اور روایتی یوم سیاہ کے طور پر منانے پر اکتفا نہ کریں بلکہ ہم اسے یوم آگہی کی حیثیت دیکر بھارت کی اس ننگی جارحیت کے پیچھے کارفرما مذموم مقاصد و عزائم اور اس کے مضمرات سے خود بھی آگاہ اور بیدار رہیں اور دوسروں کو بھی آگاہ کریں۔ انہوںنے کہاکہ اس سلسلے میں جہاں ایک طرف ہم اجتماعی طور پر 5اگست اور 15 اگست کو ہڑتال اور سول کرفیو کے ذریعے اپنا احتجاج ریکارڈ کرائیں وہیں دوسری طرف ہم انفرادی طورپر اپنے گھروں میں اس دن کی مناسبت سے خصوصی مجالس منعقد کرکے اپنی نوخیز نسلوں کو کشمیر کی تاریخ کے اہم گوشوں سے آگاہ کریں۔
سید علی گیلانی نے کہا کہ بیرون ملک مقیم کشمیریوں خاص طورپر پاکستان اور دیگر ممالک میں قیام پذیر افراد پر خاص ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ اس دن دنیا بھر میں موجود بھارتی سفارتخانوں کے باہر بڑی تعداد میں جمع ہوکر بھرپور انداز میں اپنا احتجاج درج کرانے کے ساتھ ساتھ عالمی برادری کو واضح پیغام پہنچائیں کہ کوئی ہمارا ساتھ دے یا نہ دے ، کوئی ہماری بات کرے یا نہ کرے ، کشمیری قوم اپنے حقوق اور اپنے مبنی بر حق مطالبہ آزادی سے کبھی دستبردار نہیں ہوگی اور آزادی کی صبح تک جدوجہد جاری رہے گی۔

یہ بھی دیکھیں

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کینسر کے مریضوں کو مفت ادویات کی فراہمی کیلئے فنڈز کے اجراء کی منظوری دے دی

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کینسر کے مریضوں کو مفت ادویات کی فراہمی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے