منگل 6 شوال 1442ﻫ - 18 مئی 2021

سوال، بال جبریل، علامہ محمد اقبالؒ: تشریح از خاور فہیم

سوال

اک مفلسِ خوددار یہ کہتا تھا خدا سے
میں کر نہیں سکتا گِلہ دردِ فقیری
لیکن یہ بتا، تیری اجازت سے فرشتے
کرتے ہیں عطا مردِ فرومایہ کو میری؟
(بال جبریل، علامہ محمد اقبالؒ)

 


 

تشریح از خاور فہیم

ایک خودار غریب انسان اللہ تعلیٰ سے سوال کرتا ہے کہ میں اپنی غربت و مفلسی کی شکایت و شکوہ تو کر نہیں سکتا، لیکن ایک سوال ضرور پوچھنا چاہوں گا کیا اے اللہ فرشتے تیری اجازت سے ایک حقیر، جاہل اور لا علم شخص کو جو معاشرے میں عزت و توقیر دے سیتے ہیں جبکہ ہزاروں انسان جو بہت عالم ہیں بہت ہی قابل اور نابغہ روزگار ہیں وہ کیوں ذلیل و خوار ہو رہے ہیں اور ان کا کوئی پُرسان حال نہیں ہے۔

 

یہ بھی دیکھیں

چئیرمین کشمیر کمیٹی شہریار خان آفریدی کا ترکی اردو کی پاکستان میں لانچنگ کی تقریب  کے شرکاء سے خطاب۔ 

چئیرمین کشمیر کمیٹی c کا ترکی اردو کی پاکستان میں لانچنگ کی تقریب  کے شرکاء …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے