اتوار 3 ذوالقعدہ 1442ﻫ - 13 جون 2021

کراچی میں محرم الحرام کے مجالس اور جلوسوں کے حوالے سے اعلی سطح کا اجلاس منعقد کیا گیا۔

اجلاس میں شیعہ مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے علماء حضرات کے ہمراہ وفد نے شرکت کی۔

محرم الحرام کے دوران شہر میں سکیورٹی کے موثر اقدامات پر بریفنگ دی گئی۔

شیعہ علماء کے ساتھ شریک وفد نے پولیس کیجانب سے شہر میں امن و امان کیلئے کئے جانے اقدامات کو سراہا اور حالیہ سکیورٹی خدشات کے پیش نظر پولیس سے مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

سوشل میڈیا یا دیگر زرائع سے کسی بھی مکتبہ فکر کیخلاف نفرت انگیز مواد کو پھیلانے یا شیئر کرنے والوں کیخلاف ضابطے کیمطابق قانونی کارروائی کی جائیگی۔

محرم الحرام میں سکیورٹی کیلئے شیعہ علماء اور منتظمین کی مشاورت سے سکیورٹی پلین ترتیب دیا گیا ہے۔

جلوسوں کے راستوں میں کلوز سرکٹ کیمرہ نصب کئے جا رہے ہیں۔

محرم الحرام کے مرکزی جلوسوں کی سکیورٹی کیلئے ڈروں کیمرہ کا استعمال بھی کیا جائیگا۔

عزاداروں کو لے کر آنے والی ٹرانسپورٹ کا مکمل ڈیٹا فراہم کیا جائیگا تاکہ تمام گاڑیوں/بسوں کی سکیورٹی کے موثر انتظامات کئے جا سکیں۔

محرم الحرام میں جلوسوں کے راستوں پر عام ٹریفک کو متبادل راستے فراہم کئے جائینگے یہ گویا تکلیف دہ ہے لیکن سکیورٹی خدشات کے پیش نظر اس پر عمل کرنا پڑیگا۔

علماء کیجانب سے پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے شہداء کو خران عقیدت پیش کیا گیا جنکی قربانیوں سے شہر کا امن بحال ہوا۔

ایڈیشنل آئی جی کراچی نے شیعہ علماء اور ہمراہ آئے وفد کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ ہر سال کی طرح اس سال بھی اعتماد کی فضا کو برقرار رکھا جائیگا۔

کراچی پولیس اپنے فرائض نیک نیتی سے سر انجام دے رہی ہے اللہ سے دعا ہے کہ ہم بہتر سے بہتر کام کر سکیں اور عوام کے اعتماد اور معیار پر پورا اتر سکیں، دشمن چاہے کتنا ہی شاطر کیوں نہ ہو ہم مل کر اسکے مذموم عزائم کو خاک میں ملا دینگے۔

کراچی پولیس کے تمام ذونل ڈی آئی جیز، ڈی آئی جی ایڈمن کراچی، ڈی آئی جی سی آئی اے، ڈی آئی جی ٹریفک اور تمام ڈسٹرکٹ ایس ایس پیز نے شرکت کی۔

یہ بھی دیکھیں

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے لگا۔ 

وزیراعظم عمران خان کا بے گھر افراد کو چھت کی فراہمی کا وعدہ پورا ہونے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے